خود کش دھماکہ ،لاہور کے تمام پارکوں کو تالہ لگا کر بند کر دیا گیا

خود کش دھماکہ ،لاہور کے تمام پارکوں کو تالہ لگا کر بند کر دیا گیا

  

لاہور(اپنے نمائندے سے)سانحہ گلشن اقبال پارک کے بعد لاہور کے تمام پارک اور تفریحی مقامات غیر معینہ مدت تک بند کر دیئے گئے ، عوام شدید مایوسی اور دکھ کے ساتھ گھروں تک محدود رہ گئے ۔تفریحی مقامات اور پارکوں میں ویرانیوں نے ڈیرے ڈال لئے ،پی ایچ اے کے زیرنگرانی پارکوں میں سکیورٹی کے ناکافی انتظامات اورکیمروں کی عدم تنصیب نے ادارے کی کارکردگی پر سوالیہ نشان لگا دیا ، مساجد ،امام بارگاہوں،سکولوں،کالجوں اور یونیورسٹیوں پر دہشت گردی کے حملوں کے بعد تفریحی مقامات کو ٹارگٹ کرنے سے عوام میں عد م تحفظ کا احساس بڑ ھ گیا ،معلومات کے مطابق گزشتہ روز گلشن اقبال پارک لاہور کے اندر ہونے والے خود کشن حملوں میں درجنوں افراد جاں بحق اور سینکڑوں کے زخمی ہونے کے بعد لاہور کے تمام پارکوں اور تفریحی مقامات کو سکیورٹی کی ناقص صورتحال کے باعث غیر معینہ مدت تک لوگوں کے لئے بند کر دیا گیا ہے ، باغوں اور خوبصورت پارکوں کا شہر کہلانے والے لاہور کے تمام پارک اس وقت ویرانی اور سراسمیگی کی تصویر بنے ہوئے ہیں جن میں سوائے ہوا اور پرندوں کے کسی چیز کا گزر نہ ہو رہا ہے ،صوبائی دارلحکومت کے مشہور باغات اور پارک جن میں جیلانی پارک،ماڈل ٹاؤن پارک،موچی باغ ،ناصر باغ،نیشنل بنک پارک،نواز شریف پارک،پنجاب سوسائٹی پارک،ریواز گارڈن،شالیمار گارڈن،سکھ چین گارڈن،سجاول پارک ٹاؤن شپ،شاہدرہ باغ،شالیمارباغ،زمان پارک،گلشن اقبال پارک،جلوپارک،جوائے لینڈ،سوزو واٹر پارک،سکائی لینڈ واٹر پارک،لاہور چڑیا گھر،عجائب گھر،منٹو پارک وغیر ہ میں اس وقت مکمل طور پر بند کر دیئے گئے ہیں ،شہری محمد عاطف ،سہیل محمود،عاشر جاوید،اقبال حسن نے کہا کہ عبادگاہوں اور تعلیمی درسگاہوں کے بعد اب دہشت گردوں نے پارکوں کا رخ کر لیا ہے تاکہ لوگ عبادت گاہوں ،کالجوں ،یونیورسٹیوں کے بعد اب باہر نکل کر اپنی فیملی کے ساتھ تھوڑی تفریح بھی نہ کر سکیں ،دہشت گردوں نے گلشن اقبال پارک میں بے قصور لوگوں کو نشانہ بنا کر اپنی درندگی کا ثبوت دیا ہے ،شہری فیصل علی،وحید احمد،شہباز احمد ،جاوید نثار نے کہا کہ پی ایچ کے زیرانتظام تمام پارکوں او ر باغبات میں سکیورٹی کے بالکل ناقص انتظامات ہیں ،یہ معلوم ہونے کے بعد بھی کہ ملک اس وقت حالت جنگ میں ہے اور کسی وقت بھی کوئی ناخوشگوار واقعہ ہو سکتا ہے لیکن اس کے باوجود کوئی سکیورٹی گارڈ آپ کو اپنی ڈیوٹی ٹھیک حالت میں کرتا ہوا نظر نہیں آئے گا،سکیورٹی کیمرے بھی آپ کو کہیں نظر نہیں آئیں گے،ہماری وزیر اعلیٰ پنجاب سے اپیل ہے کہ میٹروبس اور اورنج ٹرین جیسے عوام دوست منصوبے بنانے کے ساتھ ساتھ عوام کی سکیورٹی کے لئے کچھ اقدامات کر دیں تاکہ آنے والے وقت میں مزید اس طرح کے حادثات سے بچا جا سکے ۔

مزید :

صفحہ اول -