میکسکو سٹی میں ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف شدید احتجاج، پتلے نذر آتش کئے

میکسکو سٹی میں ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف شدید احتجاج، پتلے نذر آتش کئے

  

میکسیکو سٹی (کے پی آئی)امریکی صدارتی ری پبلک امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کے خلاف نفرت اور غم و غصہ میں اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ میکسیکو سٹی میں سینکڑوں افرادنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور ان کے پتلے نذر آتش کئے ۔ امریکی رئیل اسٹیٹ کے بڑے تاجر کی مسکراتی ہوئی تصویر کے ساتھ امریکی عوام نے مظاہرہ کرتے ہوئے اس تصویر کو بعد ازاں آگ لگادی ۔ ایسٹر کے موقع پر شیطان کو آگ لگانے کا تہوار منایا جاتا ہے ۔ روایت کے مطابق میکسیکو کے شہریوں نے بھی بدی کی اس علامت کو نذر آتش کیا ۔ عوام کے اندر جس شخصیت کو ناپسند کیا جاتا ہے اس پر لعن طعن کی جاتی ہے ۔ ڈونلڈ ٹرمپ کو اس سال کا شیطان قرار دے کر اس پر برہمی ظاہر کی گئی ۔ امریکہ میں میکسیکو سے آنے والے تارکین وطن کی کثیر تعداد موجود ہے لیکن ڈونالڈ ٹرمپ نے اپنی انتخابی مہم کے دوران میکسیکو شہریوں کے خلاف زہرافشانی کی تھی ، امریکہ میں موجود میکسیکو کے تارکین وطن کو مجرم اور عصمت ریزی کرنے کے مرتکب قرار دیا تھا ۔ تقریبا 200 افراد نے ایسٹر کے موقع پر شیطان کو آگ لگانے کی روایتی تقریب میں شرکت کی اور 6 فٹ والے ٹرمپ کے پتلے کو نذر آتش کیا ۔ امریکہ میں ایسٹر کے مبارک و مقدس دنوں میں شیطان کی علامتوں کے پتلے بناکر انہیں نذر آتش کیا جاتا ہے ۔ اب ڈونالڈ ٹرمپ کوشیطان بناکر ان کا پتلہ نذر آتش کیا گیا ۔اس سے قبل بھی شکاگو ، نیویارک وغیرہ میں ریپبلکن صدارتی امیدوار ڈونالڈ ٹرمپ کے خلاف مظاہرے ہوئے تھے جس پر مجبورا انہیں انتخابی جلسے ملتوی کرنا پڑا تھا۔

مزید :

عالمی منظر -