غزہ، ممنوعہ ہتھیاروں کے استعمال کا نیا ثبوت، ملبے سے ناکارہ فاسفورس بم برآمد

غزہ، ممنوعہ ہتھیاروں کے استعمال کا نیا ثبوت، ملبے سے ناکارہ فاسفورس بم برآمد

  

غزہ (این این آئی) غزہ کی پٹی میں ایک مکان کے ملبے کی صفائی کے دوران عملے کو ناکارہ فاسفور بم ملا ہے جس نے اس بات پرمہر تصدیق ثبت کردی ہے کہ اسرائیل نے غزہ کی پٹی پر مسلط کی گئی جنگوں میں عالمی سطح پر ممنوعہ ہتھیاروں کا بے دریغ استعمال کیا ہے۔ غزہ کی پٹی میں پولیس کے زیرانتظام بم ڈسپوزل شعبے کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیاہے کہ وسطی غزہ میں جنگ سے مسمار مکان کے قریب سے ملبہ ہٹانے کے دوران زمین میں گھسا ایک بم ملا ہے جس کی تحقیق کے بعد پتا چلا ہے کہ وہ وائٹ فاسفورس بم ہے جسے 2008ء اور 2009ء کے دوران غزہ کی پٹی پر مسلط کی گئی جنگ کے دوران گرایاگیا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ناکارہ فاسفور بم اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ صہیونی فوج نے غزہ کی پٹی میں شہری آبادی پر عالمی سطح پر ممنوعہ اور وسیع پیمانے پر تباہی پھیلانیوالے کیمیائی ہتھیار استعمال کئے تھے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ وسطی غزہ میں النیصرات کالونی میں کھدائیوں کا کام جاری تھا کہ اس دوران عملے کو مشکوک بم دکھائی دیا، انہوں نے پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس اور بم ڈسپوزل اسکواڈ نے موقع پر پہنچ کر بم کا معائنہ کیا تو پتا چلا کہ یہ بم 155 ملی میٹر دھانے والی توپ سے داغا گیا ہے۔ بم ناکارہ ہونے کے باعث شہریوں کیلئے خطرے کا باعث نہیں تھا کیونکہ اس کے اندر سے وائیٹ فاسفورس ختم ہوچکا تھا۔

مزید :

عالمی منظر -