پسماندہ علاقوں کی ترقی کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام جاری ہے :وزیر اعلٰی سندھ

پسماندہ علاقوں کی ترقی کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام جاری ہے :وزیر اعلٰی سندھ

بدین(خصوصی نامہ نگار)وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی حکومت غریب و پسماندہ علاقوں کو ترقی دلانے کیلئے ترجیحات پر کام کررہی ہے۔ انہوں نے سندھ سے تعلق رکھنے والے قومی و صوبائی اسمبلی کے اراکین کو کہا کہ وہ جلد از جلدترقیاتی منصوبوں کی اسکیمیں بناکر پلاننگ اینڈ ڈیولپمنٹ ڈپارٹمنٹ اور وزیر اعلیٰ ہاؤس میں ارسال کریں تا کہ اُن اسکیموں کو سالانہ ترقیاتی پروگرام میں شامل کیا جائے ۔ یہ بات انہوں نے نؤدمبالو کے قریب گاؤں چوہدری غلام محمد آرائیں میں ڈاکٹر غلام مرتضیٰ آرائیں کی چائے پارٹی میں شرکت کے موقع پر ایم این ایز، ایم پی ایز اور علاقے کے معززین سے کہی۔ وزیراعلیٰ نے مزید کہا کہ 2010کی بارشوں اور سیلاب اور 2011کی تیز بارشوں نے پورے سندھ میں تباہی مچا ئی تھی جس سے بدین ضلع کو کافی نقصان پہنچا تھا اور ٹھوڑی بندکا بھی نقصان ہوا تھا جس سے اربوں روپوں کا نقصان ہو ا تھا جس پر سابق صدر آصف علی زرداری اور چیئرمین بلاول بھٹو زرد اری کی خصوصی ہدایات پر سیم نالے بنانے کا پروگرام بنایا گیا جس کے تحت سنجر چانگ اینڈ تھوڑا دی ڈرین کے 52میل کی اسکیم کا افتتاح کر رہا ہوں جس پر 749.967ملین روپے خرچ ہوئے ہیں اس کے ذریعے بارش کا پانی اور سرپلس کھارے پانی کی نکاسی کی جائیگی جس سے ٹنڈوالہیار، بدین اور میرپورخاص کی 35ہزار ایکڑ زمین کو فائدہ ہوگا ۔وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ آئی پی پی اجلاس میں چاروں صوبوں کے وزراء اعلیٰ کو مدعو کیا گیا تھا ا س میں ہم نے وفاقی حکومت اور وزیر اعظم پاکستان کے سامنے اپنا مضبوط موٗ قف اختیا رکیا کہ کالاباغ ڈیم کی تعمیر سے پوراسندھ بنجر ہو جائیگا اس دلائل کے سننے کے بعد کالاباغ ڈیم منصوبہ ختم کردیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ سندھ گذشتہ 4سالوں سے قحط کی صورتحال سے دوچار ہے جس میں بدین اور ریگستانی علاقہ تھرپارکر شامل ہیں ۔ سید قائم علی شاہ نے کہاکہ حکومت سندھ نے پانی کی قلت کو مدِ نظر رکھتے ہوئے محکمہ آبپاشی اور سیڈا کے ذریعے مختلف نہروں کی بھل صفائی کرائی ہے اور سیم نالے بھی بنائے گئے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ جلد ہی ماتلی ، ٹنڈو باگو اور تلہار سمیت دیگر علاقوں میں بھی سیم نالے بنائے جائینگے تا کہ بارش کا پانی کی نکاسی ہوسکے ۔ انہوں نے ڈاکٹر غلام مرتضیٰ آرائیں کی خدمات کو سراہاتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر غلام مرتضیٰ امریکہ میں بیٹھ کر سفارتی خدمات انجام دیتے ہیں اور پاکستانیوں کی خدمت کرتے ہیں انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر مرتضیٰ کی آج بھی پی پی کے ساتھ تعلقا ت ہیں اسی کی بدولت اس علاقے میں ترقی کا کا م ہورہا ہے۔ انہوں نے کہاکہ اس علاقے کے کافی لوگ بیرونِ ممالک میں کام کررہے ہیں لیکن پاکستان کیلئے ان کا کوئی خدمت نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارا نصب العین غریبوں کی خدمت کرنا اور ترقی سے نظر انداز علاقوں کو ترقی دینا ہے ۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ پی پی کی حکومت جلد ہی بیروزگاروں کا روزگار فراہم کریگی اور ترقی کا ایک بڑا عمل شروع کیا جائیگا جس کے تحت تعلیم، صحت، ڈرینج اور واٹر سپلائی اسکیمیں دی جائینگی ۔ اس سے قبل وزیراعلیٰ سندھ سیدقائم علی شاہ نے گاؤں غلام محمد چوہدری میں 7.851ملین لاگت کی واٹرسپلائی اسکیم ،551.176ملین کی لاگت سے چھٹو موری سے جمڑاؤ موری وایا حاجی رمضان چانڈیو 5کلومیٹر روڈ،ایک ڈرینج و پبلک ہیلتھ اسکیم اور بنیادی صحت مرکز کا افتتاح کیا ۔ گاؤں حاجی رمضان چانڈیو میں میڈیا سے گفتگوکرتے ہوئے وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ سانحہ لاہور پر حکومت سندھ کو دکھ ہے اور ہم ہر عمل میں دہشتگردی کے خلاف ہیں جب تک ایک بھی دہشتگرد زندہ ہے سندھ حکومت نمٹتی رہیگی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان رینجرز اور سندھ پولیس کی کاوشوں سے کراچی میں دہشتگردی اور جرائم میں کمی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کل ہماری اپیک کمیٹی کا اجلاس ہوگا جس میں دہشتگردی سے نمٹنے کیلئے مزید اقدامات کئے جائینگے ۔ اس موقع پرایم این اے سردار کمال خان چانگ، صوبائی وزیر پارلیمانی امور ڈاکٹر سکندرعلی میندھرو، ایم پی اے میراللہ بخش تالپر، ایم پی اے بشیر ہالیپوتہ اور ڈاکٹر غلام مرتضیٰ آرائیں نے بھی خطاب کیا ۔ اس موقع پر ڈویژنل کمشنر حیدرآباد قاضی شاہد پرویز، ڈی آئی جی پولیس خادم حسین رند، حاجی رمضان چانڈیو ،میر غلام علی تالپر، اصغر ہالیپوتہ، حاجی عبدالغفور میمن اوردیگر موجود تھے۔

مزید : کراچی صفحہ اول