کوٹ ادو ‘14 ماہ قبل ٹریفک حادثہ کے متاثرین وزیراعلیٰ پنجاب کی امداد کے منتظر

کوٹ ادو ‘14 ماہ قبل ٹریفک حادثہ کے متاثرین وزیراعلیٰ پنجاب کی امداد کے منتظر

کوٹ ادو( تحصیل رپورٹر )14ماہ قبل کوٹ ادو بائی پاس کے قریب بچوں کو سکول لانے والے کیری ڈبہ اور ہائی ایس مسافر وین کے تصادم میں سکول ٹیچر او ر چار بچوں سمیت 8 افراد جان بحق 24سے زائد زخمی ہونے والوں کے لواحقین کو وزیر اعلیٰ پنجاب کی جانب سے اعلان کی گئی امدادی رقم تاحال نہ مل سکی۔ تفصیل کے مطابق20جنوری2015(بقیہ نمبر33صفحہ7پر )

کو کوٹ ادو بائی پاس کے قریب ایک ہائی ایس مسافر وین نمبری 3275/MND جو کہ کوٹ ادو سے ملتان جار ہی تھی آئل ٹینکر کو اوور ٹیک کرتے ہوئے تیز رفتاری کے باعث سامنے سے آنے والی پرائیویٹ سکول کیری ڈبہ نمبر 36/MH جوکہ سنانواں سے لرنرز ہاؤس سکول سسٹم کوٹ ادو کے بچوں کو اٹھا کر آرہی تھی سے زور دار دھماکہ سے ٹکرا گئی تھی،جس کے نتیجے میں کیری ڈبہ ڈرائیور تیمور حسن رضا،سکول ٹیچر عالیہ حسن سمیت 4طالب علم فصیح الرحمن،سحرش،عبدالواسع اور ایک نامعلوم موقع پر ہی جان بحق ،جبکہ دو شدید زخمی نشتر ہسپتال ملتان میں دم توڑ گئے تھے،جبکہ24 افرادجن میں سکول کے بچے اور ویگن کے مسافر زوحا مرتضیٰ دختر مرتضی، واصف ولد مرتضیٰ، عبیدالرحمن ولد ملک ندیم ، ماہین الرحمن دختر ملک ندیم ، عبداللہ مسعود ولد مسعود ،سالار اسلم ولد محمد اسلم، محمد یوسف رضا ولد شاہد، شازیہ بی بی ، میراث ولد نورنگ ، محسن رضا، علی رضا ، فخر الدین ، ریاض حسین ، سمیرا بی بی، ظفر شاہ ، غلام قاسم ، منیر احمد ، عمران، ممتاز بی بی زوجہ محمد اقبال ، محمد طاہر ولد اصغر علی ، کاشف اسلم ولد رحیم بخش،عبدالرشید شدید زخمی ہو گئے تھے جو کہ اپاہج ہونے پر مشکلات کی زندگی بسر کر رہے ہیں،حادثہ کے بعد وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی جانب سے مرنے والوں اور زخمیوں کی مالی امداد کا اعلان کیا گیا تھا جس کی تمام رپورٹس بھی ڈی سی او مظفرگڑھ نے مکمل کرکے لاہور بجوا دی تھی مگر14ماہ گزرنے کے با وجود مرنے والوں کے لواحقین اور زخمیوں کی مالی امداد نہ مل سکی،متاثرین نے وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ انہیں فوری طور اعلان کردہ مالی امداد دی جائے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر