سوشل سیکیورٹی،ملازمین پے سکیلوں کی اپ گریڈیشن نہ ہونے کیخلاف سراپا احتجاج

سوشل سیکیورٹی،ملازمین پے سکیلوں کی اپ گریڈیشن نہ ہونے کیخلاف سراپا احتجاج

  

لاہور( خبرنگار) محکمہ سوشل سیکیورٹی پنجاب کے ملازمین پے سکیلوں کی اپ گریڈیشن نہ ہونے کے خلاف دوسرے روز بھی سراپا احتجاج بنے رہے اور دوسرے روز بھی صبح دس بجے سے بارہ بجے تک دو گھنٹے کے لئے آؤٹ ڈور بند رکھے۔ شہر میں قائم سوشل سیکیورٹی کے ہسپتالوں میں ملازمین نے آؤٹ ڈور بند رکھے اور ہڑتال کی اور اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرے کرتے رہے۔ اس موقع پر ملازمین نے سوشل سیکیورٹی ہسپتال ملتان روڈ اور سوشل سیکیورٹی ہسپتال شاہدرہ سمیت سوشل سیکیورٹی ہسپتال کوٹ لکھپت میں آؤٹ ڈور کو بند رکھا۔ اس موقع پر آل پنجاب سوشل سیکیورٹی سٹاف ایسوسی ایشن کے صوبائی صدر سہیل احمد جٹ اورجنرل سیکرٹری ڈاکٹر خلیق احمد نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعلیٰ پنجاب نے صوبے بھر کے سرکاری ملازمین کے پے سکیلوں کو اپ گریڈ کرنے کا حکم دیا جس پر محکمہ صحت ، تعلیم سمیت تمام صوبائی محکموں کے ملازمین کے پے سکیلوں کو اپ گریڈ کیا گیا جبکہ سوشل سیکیورٹی ہسپتالوں کے ملازمین میڈیکل اور کلرکوں کے پے سکیل اپ گریڈ نہیں کئے گئے ہیں جس کے بارے کمشنر سوشل سیکیورٹی کو متعدد بار یاددہانی کروائی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک مطالبات منظور نہ مانے گئے اس وقت سوشل سیکیورٹی ہسپتالوں میں روزانہ دو گھنٹے آؤٹ ڈور میں ہڑتال کی جائے گی اور آؤٹ ڈور کو بند رکھا جائے گا۔ دوسری جانب سوشل سیکیورٹی ہسپتالوں میں ہڑتال کے باعث علاج و معالجہ کے لئے آنے والے مزدوروں اور ان کے عزیز و اقارب کو سخت دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔دوسری جانب سیکرٹری لیبر ڈاکٹر شعیب سے ملازمین کے مذاکرات ہوئے، تاہم مذاکرات ناکام ہونے پر ملازمین نے آج تیسرے روز بھی ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے اور سوشل سیکیورٹی ہسپتالوں کے آؤٹ ڈورز آج مکمل بند کرنے کا اعلان کر دیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -