پیپلز پارٹی کا مسلم لیگ (ق) کو انتخابی اتحاد کی پیشکش کا انکشاف

پیپلز پارٹی کا مسلم لیگ (ق) کو انتخابی اتحاد کی پیشکش کا انکشاف

  

لاہور(نمائندہ خصوصی،مانیٹرنگ ڈیسک،اے این این ) پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین صدر آصف علی زرداری نے ق لیگ کو انتخابی اتحاد کی پیشکش کردی ، ق لیگ کے کامل علی آغا نے پیشکش کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی کی پیشکش پر پارٹی اجلاس میں غور کریں گے۔تفصیلات کے مطابق آصف علی زرداری نے لاہور میں پارٹی رہنماؤں سے گفتگو میں کہا ہے کہ سیاسی میدان سجے گا تو مخالفین کو منہ توڑ جواب بھی ملے گا ۔پارٹی ذرائع کے مطابق آصف زرداری نے نئی سیاسی صف بندی کے لئے مشاورت تیز کردی ہے اور رابطے شروع کردئیے ہیں،اس حوالے سے حتمی فیصلہ پاناما کیس پر عدالتی حکم کے بعد دیں گے۔ذرائع کے مطابق بھٹو شہید کی 4اپریل کو ہونے والی برسی کے بعد پارٹی قیادت پنجاب کو مرکز بناکر سیاسی بساط بچھائے گی ،اس حوالے سے سابق صدر نے تنظیم سازی کرنے اور متحرک ہونے کی ہدایت کردی ہے۔آصف زرداری نے پارٹی قیادت کو کہا کہ ہمارے پاس کرنے کو بہت کچھ ہے لیکن آپ کچھ دن انتظار کریں،بی بی کا بی بلاول میں بھی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ بلاول بھی ہیں، میں بھی ہوں،میدان سجے گا تو مخالفین کو منہ توڑ جواب ملے گا، اپنی حتمی سیاسی حکمت عملی پاناما لیکس فیصلے کے بعد عیاں کریں گے۔

انکشاف

لاہور(اے این این)پاکستان پیپلزپارٹی کے شریک چےئرمین و سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کواقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کرنا وقت کی بڑی ضرورت ہے ، پاکستان پیپلزپارٹی کی بنیاد مسئلہ کشمیر پر رکھی گئی تھی ۔ ذوالفقار علی بھٹو نے کشمیر پرایک ہزار سال جنگ لڑنے کا اعلان کیاتھا۔ ہم اسی اعلان پر قائم ہیں اور ان ہی نظریات کو لے کر آگے بڑھ رہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چوہدری محمدیٰسین اور سابق صدر آزادکشمیر سردار یعقوب خان سے بات چیت کر تے ہوئے کیا۔ سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری نے کہا کہ مسئلہ کشمیر ایک کورایشو ہے اور ہم مسئلہ کشمیر کواس خطے کا سب سے بڑا مسئلہ سمجھتے ہیں ۔ جنوبی ایشیا ء کا امن اسی صورت میں ممکن ہوسکتا ہے کہ مقبوضہ کشمیر کی عوام کو حق خوداریت کا پیدائشی حق دیا جائے۔ کشمیری عوام اپنے خون سے آزادی کی جنگ لڑ رہے ہیں اور تاریخ میں یہ پہلی بار ہے کہ کشمیری عوام نے گولیوں کامقابلہ اپنے سینوں پر کیااورتشدد کی راہ نہیں اپنائی۔انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیاجائے۔ کشمیری عوام نے جدوجہد آزادی کیلئے لازوال قربانیاں دی ہیں ۔ پاکستانی عوام کشمیریوں کے شانہ بشانہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کی بنیاد مسئلہ کشمیر پر رکھی گئی تھی اور ہم نے اپنے دور حکومت میں مسئلہ کشمیر کو حل کروانے کیلئے دو رس اقدامات اٹھائے تھے۔ انہوں نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر اس وقت ایک آتش فشاں کی شکل اختیار کر گیا ہے قابض بھارتی افواج کشمیریوں پر انسانیت سوزمظالم ڈھا رہی ہے ۔ لاکھوں کشمیری جام شہادت نوش کر گئے ہیں ۔ ہزاروں افراد زخمی اور ٹارچرسلوں میں زندگی اور موت کی کشمکش میں مبتلا ہیں۔خواتین کی عصمت دری بھارتی فوج کا روز کامعمول بن گیا ہے۔ اقوام عالم مسئلہ کشمیر کے آتش فشاں کو سردکرنے میں اپنا کردار ادا کرے۔ اقوام عالم خصوصاًانسانی حقوق کی تنظیمیں بھارت کے انسانیت سوز مظالم کو روکنے میں اپنا کردار ادا کریں۔ انہوں نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کا واحد حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق استصواب رائے ہے۔ دنیا کی کئی اقوام استصواب رائے کے ذریعے آزادی حاصل کرچکی ہیں ۔ کشمیری عوام کو بھی اس کا حق ملناچاہئے ۔ پاکستان میں ہماری حکومت کے جانے کے بعد مسئلہ کشمیر پر پیش رفت کم ہو گئی ہے ۔

مزید :

صفحہ اول -