صوبائی ترقیاتی ورکنگ پارٹی کی 63 ملین لاگت کے 17 پراجیکٹس کی منظوری

صوبائی ترقیاتی ورکنگ پارٹی کی 63 ملین لاگت کے 17 پراجیکٹس کی منظوری

  

پشاور (سٹاف رپورٹر) صوبائی ترقیاتی ورکنگ پارٹی (PDWP) نے 63295.115 ملین روپے لاگت کے17پراجیکٹس کی منظوری دے دی۔ یہ منظوری ایڈیشنل چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا محمد اعظم خان کی زیر صدارت پی ڈی ڈبلیو پی کے منگل کے روز منعقدہ اجلاس میں دی گئی جس میں اس کے ممبران اور متعلقہ انتظامی سیکرٹریز نے شرکت کی۔اجلاس میں صوبے کی ترقی کے لئے مختلف شعبوں بشمول اعلیٰ تعلیم،ابتدائی و ثانوی تعلیم، اوقاف، زراعت،کثیر شعبہ جاتی ترقی،پانی،سڑکوں اور پلوں،سماجی بہبود،سائنس اینڈٹیکنالوجی اینڈانفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹرانسپورٹ سے متعلق22پراجیکٹس پر تفصیلی غور و خوض کے بعد17پراجیکٹس کی منظوری دی گئی جبکہ پانچ پراجیکٹس کو غیر موزوں ڈیزائن اور حکمت عملیوں کے باعث موخر کر کے انہیں تصحیح اور بہتر بنانے کیلئے متعلقہ محکموں کو واپس بھیج دیا گیا۔اس موقع پر محکمہ اعلیٰ تعلیم کے پراجیکٹس میں چار سالہ بی ایس پروگرام میں اساتذہ کی شمولیت اورانسٹی ٹیوٹ آف کرمنا لوجی اینڈ فارنسک سائنسز پشاور یونیورسٹی کی منظوری دی گئی۔اسی طرح دیگر منظور کردہ منصوبوں میں اوقاف کے شعبے میں صرف ایک منصوبہ دارالعلوم حقانیہ اکوڑہ خٹک کی تعمیر اور بحالی زراعت کے شعبے میں واحد پراجیکٹ خیبر پختونخوا میں زرعی انٹروینشن کے لئے مارکیٹ رابطے پیدا کرنے اور کوالٹی کی یقین دہانی کے لئے سرٹیفیکیٹس کی سہولیات متعارف کرانے،کثیر شعبہ جاتی ترقی کے پراجیکٹ خیبر پختونخوامیں ملٹی پل انڈیکیٹر کیلئے کلسٹر سروے(MICS) کی فراہمی شامل ہے۔اس کے علاوہ پانی کے شعبے میں منظور کردہ منصوبوں میں ضلع صوابی میں آبپاشی چینلز،سیلاب سے بچاؤ کے پشتوں اور پلوں کی بہتری اور توسیع،سڑکوں اور پلوں کے شعبے میں منظور کردہ منصوبوں میں بائی کنڈ تا نختر کنڈاؤ سڑک اور میاں کلے تا سر بانڈہ،نظر آباد تا اشربز روڈ کی بہتری،توسیع اور بلیک ٹاپنگ،سیگرام تا ملوکہ روڈ کی بہتری،توسیع اور پختہ بنانا اور سوات میں ملک آباد تا گٹ روڈ کی تعمیر اور بحالی،اسی طرح خیبر پختونخوا میں 6عدد لیول کراسنگ(پھاٹک)کی اپ گریڈیشن پہلا مرحلہ ضلع نوشہرہ میں،ضلع مردان میں یونین کونسل مچئی،رستم بازار،چار گلی،پلو ڈھیری،جمال گڑھی،ساول ڈھیر،کٹی گڑھی،کاٹلنگ ون اور کاٹلنگ2میں اندرونی سرکوں کی تعمیر اور پختگی ،ضلع ایبٹ آباد میں بھٹی تا بیرجال پایاں اور دانا۔10کلو میٹر سڑک کی بہتری اور بلیک ٹاپنگ،چھانگلہ سے اسلام آباد تک مخنیال سڑک کی فزیبلٹی سٹڈی،ڈیزائن اورتعمیر،خیبر پختونخوا میں ضرورت کی بنیاد پر سڑکوں اور پلوں کی بحالی،بہتری،توسیع اور تعمیر؍ضلع ایبٹ آباد میں حلقہ پی کے۔48میں مختلف سڑکوں کی بہتری اور بحالی اور ضلع سوات میں منگلاور تا مالم جبہ 35کلو میٹر روڈ کی تعمیر اور بلیک ٹاپنگ کے منصوبے شامل ہیں جبکہ سماجی بہبود کے شعبے میں منظور کردہ واحد منصوبہ پشاور میں نشے کے عادی افراد کے لئے مثالی علاج معالجے اور بحالی مرکز کا قیام،سائنس و انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے میں منظور کردہ منصوبوں میں حکومت خیبر پختونخوا کے لئے آئی سی ٹی سنٹر کے انفرا سٹرکچر اور خیبر پختونخوا میں سٹیزن فیسلیٹیشن سنٹر،ٹرانسپورٹ کے شعبے میں منظور کردہ منصوبوں میں ایشائی ترقیاتی بنک کی معاونت سے پشاور ماس ٹرانزٹ سسٹم(بس ریپڈ ٹرانزٹ) کی تعمیر جیسے منصوبے شامل ہیں۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -