آصف زرداری کا پہلا وار۔۔۔ حکمران جماعت کا ایسا رہنماءپیپلز پارٹی میں شامل ہونے کو تیار ہو گیا کہ جان کر ہی نواز شریف کی پریشانی کی حد نہ رہے گی

آصف زرداری کا پہلا وار۔۔۔ حکمران جماعت کا ایسا رہنماءپیپلز پارٹی میں شامل ...
آصف زرداری کا پہلا وار۔۔۔ حکمران جماعت کا ایسا رہنماءپیپلز پارٹی میں شامل ہونے کو تیار ہو گیا کہ جان کر ہی نواز شریف کی پریشانی کی حد نہ رہے گی

  

کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراعظم نواز شریف کے دورہ حیدر آباد اور آصف علی زرداری کی لاہور آمد کے بعد مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلز پارٹی نے ایک دوسرے کے رہنماﺅں کو اپنی جماعتوں میں شامل کرنے کی کوششیں تیز کر دی ہیں اور ایسا لگتا ہے کہ آصف علی زرداری حکمران جماعت پر پہلا وار کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔

ٹروکالر کی نئی ایپلیکیشن متعارف، گوگل ڈو کیساتھ انضمام کا بھی اعلان

نجی خبر رساں ادارے ایکسپریس ٹریبیون کے مطابق پیپلز پارٹی اگلے چند دنوں میں مسلم لیگ (ن) کی بڑی وکٹ اڑانے کیلئے مکمل طور پر تیار ہے ۔ پیپلز پارٹی کے اندرونی ذرائع کا کہنا ہے کہ ”کوئی اور نہیں بلکہ مسلم لیگ (ن) سندھ کے صدر اسماعیل راہو اپنے کارکنان کیساتھ پیپلز پارٹی میں شمولیت اختیار کر سکتے ہیں۔“

ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی اور اسماعیل راہو کے درمیان خفیہ رابطے ہوئے ہیں اوردونوں کے درمیان اختلافات کے خاتمے پر اصولی اتفاق ہو گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق پی پی پی کے ایک رہنماءنے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ ”اسماعیل 4 اپریل کو ذوالفقار علی بھٹو کی برسی کے موقع پر پیپلز پارٹی میں شامل ہو سکتے ہیں۔“ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اس کے بعد مسلم لیگ (ن) کے مزید رہنماءبھی پیپلز پارٹی میں شامل ہوں گے۔

اسماعیل راہو ضلع بدین سے تعلق رکھتے ہیں اور کسان رہنماءفاضل راہو کے بیٹے ہیں جنہیں 1987ءمیں قتل کر دیا گیا تھا۔ انہوں نے پی ایس 59 بدین، ٹنڈو محمد خان سے پیپلز پارٹی کے امیدوار کو شکست دی تھی۔ اندرونی ذرائع کے مطابق پیپلز پارٹی اسماعیل راہو کو ذوالفقار مرزا اور ان کی اہلیہ ایم این اے فہمیدہ مرزا کے خلاف استعمال کرنا چاہتی ہے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم اور دیگر رہنماﺅں کی جانب سے سندھ اور اسماعیل راہو کو مسلسل نظرانداز کرنا دوریوں کا باعث بنا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ” وزیراعظم نے 9 مارچ کو دورہ ٹھٹھہ کے دوران اسماعیل کے ساتھ ملاقات کی جو ایک گھنٹہ جاری رہی۔ لیکن مسلم لیگ (ن) کے ایک رہنماءنے اس بات سے لاعلمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ”اسماعیل راہو نے وزیراعظم کے حالیہ دورہ حیدر آباد میں شمولیت کی یقین دہانی کرائی تھی مگر ایسا نہیں ہوا۔“

ذرائع کے مطابق ”انہوں نے فیملی ایمرجنسی کا بتا کر معذرت کر لی تھی تاہم انہوں نے کئی مواقعوں پر مسلم لیگ (ن) کی قیادت کے خلاف متعدد مرتبہ شکایات کیں۔“

مزید :

قومی -اہم خبریں -