چڑیاگھر کے شیروں کو احتیاطی طور پر بلڈ پیراسائٹ کی ادویات دی جائیں،خالد عیاض

چڑیاگھر کے شیروں کو احتیاطی طور پر بلڈ پیراسائٹ کی ادویات دی جائیں،خالد عیاض

لاہور( لیڈی رپورٹر) لاہور چڑیاگھر کے ٹائیگرز اور شیروں کو احتیاطی طور پر بلڈ پیراسائٹ کی ادویات دی جائیں کیونکہ اس مرض کی دنیا بھر میں کوئی ویکسین ا موجود نہیں ۔ ویکٹر کو کنٹرول کرنے کیلئے مختلف طریقے اپنائے جائیں تاکہ اس امر کی نشاندہی کی جائے کہ کس قسم کی مکھی بلڈپیراسائٹ کا سبب بنتی ہے ۔ شیروں اور ٹائیگرز میں وائرس سے پھیلنے والی بیماریوں کیخلاف حفاظتی ٹیکوں کا کورس کروایا جائے ۔ اس امر کا فیصلہ ڈائریکٹر جنرل وائلڈلائف اینڈ پارکس خالد عیاض خان کی زیر صدارت لاہور چڑیاگھر میں شیرو ں اور ٹائیگرز میں پائی جانے والے بلڈپیراسائٹ سے بچاؤ کے بارے میں منعقدہ صوبہ بھر کے ویٹرنری ماہرین کے سیمینار میں کیا گیا ۔

اس موقع اسسٹنٹ پروفیسر آف پتھالوجی یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز ڈاکٹر اشتیاق احمد،اسسٹنٹ پروفیسر پیراسائٹولوجی یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز ڈاکٹر عنیب ، ڈپٹی ڈائریکٹر ،ڈیزیز ڈائیگنوسٹک لیب لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر سید عباس علی شاہ ، پرنسپل رفاہ کالج آف ویٹرنری سائنسز ڈاکٹر ممتاز خان، اسسٹنٹ پروفیسر میٹ سائسنز یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز لاہو رڈاکٹر جیسپال حیات ، اسسٹنٹ پروفیسر پیراسائٹولوجی یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز ڈاکٹر ہارون، سینئر ویٹرنری آفیسر پیراسٹولوجی لیب و ڈیزیز ڈائیگناسٹک لیب ڈاکٹر ندا ، اسسٹنٹ پروفیسر ، یونیورسٹی ڈائیگناسٹک لیب یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز لاہورڈاکٹر ٖفریحہ، ویٹرنری آفیسر سفاری زولاہورڈاکٹر محمد اظہر ، ایسوسی ایٹ پروفیسر ایپڈامالوجی یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز ڈاکٹر حسن مشتاق ، سینئر ویٹرنری آفیسر لاہور چڑیا گھرڈاکٹر رضوان، ویٹرنری آفیسر وائلڈ لائف بریڈنگ فارم جلو لاہور اور ویٹرنری آفیسر لاہور چڑیا گھر ڈاکٹر وردہ گل کے علاوہ ڈائریکٹر لاہور چڑیاگھر حسن علی سکھیرا ، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف ہیڈ کوارٹرز محمد نعیم بھٹی، ڈپٹی ڈائریکٹر وائلڈلائف پبلسٹی عامر مسعود بھی موجود تھے۔ ۔ ڈی جی وائلڈلائف نے کہا کہ سیمینار میں موجود تمام ویٹرنری ماہرین کا واٹس ایپ گروپ بنایا جائے جس میں لاہور، بہاولپور اور ڈی جی خان کے چڑیاگھروں کے ویٹرنری افسران کو بھی شامل کیاجائے تاکہ جانوروں کے علاج و معالجہ کے حوالے سے درپیش مسائل کے حل میں ایک دوسرے کی مشاورت حاصل کرسکیں ۔خالد عیاض خان نے کہا کہ صرف شیروں اور ٹائیگرز میں بلڈ پیراسائٹ کو ہی کنٹرول نہ کیا جائے بلکہ دیگر تمام بیماریوں کو کنٹرول کرنے کیلئے بھی مزید اقدامات کئے جائیں ۔ انہوں نے کہا کہ شیروں اور ٹائیگرز کے پنجروں کے نزدیک مکھیوں سے بچاؤ کیلئے الیکٹرک ٹریپ نصب کئے جائیں تاکہ اس مخصوص مکھی کا پتہ چلایا جا سکے جو بلڈ پیراسائٹ پھیلانے کا سبب بنتی ہے ۔ سیمینار میں ویٹرنری ماہرین کو مرنے والے ٹائیگرز کی پوسٹ مارٹم رپورٹس بھی دیکھائی گئیں اور اس بیماری سے متعلق سیر حاصل گفتگو کی گئی ۔ سیمینار کو بتایا گیا کہ بلڈپیراسائٹ کی بیماری کے حوالے سے نہ صرف اندرون ملک ویٹرنری ماہرین سے بلکہ بیرون ملک موجود ڈاکٹر ارشد ہارون طوسی ، ڈاکٹر مدثر اور ایمپررزو لندن میں اینجلا میتھیوز سے بھی مسلسل رابطے میں ہیں ۔سیمینار میں موجود تمام ویٹرنری ماہرین میں طے پایا کہ وہ وقتاً فوقتاً لاہور چڑیاگھر کے دورے بھی کرتے رہیں گے اور اس سلسلہ میں اپنی بھر پور معاونت فراہم کریں گے ۔مزید براں یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز اور رفاہ یونیورسٹی کے پرنسپل نے ڈی جی وائلڈلائف کو یقین دہانی کروائی کے کہ وہ ہمہ وقت ہر قسم کے تعاون کیلئے تیار ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...