سکھر ، کھجور مارکیٹ کی چھت گر گئی ، 6خواتین ، بچے سمیت 13افراد جاں بحق ، متعدد زخمی

سکھر ، کھجور مارکیٹ کی چھت گر گئی ، 6خواتین ، بچے سمیت 13افراد جاں بحق ، متعدد ...

سکھر (بیورو رپورٹ )سندھ کے علاقے روہڑی میں کھجور مارکیٹ میں قائم ایک گودام کی چھت گرنے سے 6 خواتین اور ایک بچے سمیت 13 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے ہیں ۔ گودام کی چھت دھماکے سے اس وقت گری جب مزدور وہاں کام میں مصروف تھے۔ واقعے کے بعد امدادی کام کے لیے پاک فوج اور رینجرز کے جوان بھی پہنچ گئے۔واقعے میں ایک ہی خاندان کے چار افراد کی ہلاکت کی بھی تصدیق کی گئی ہے ۔گورنر سندھ محمد زبیر نے کھجور مارکیٹ سکھر میں چھت گرنے کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر سکھر سے اس کی رپورٹ طلب کرلی جبکہ چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے پارٹی رہنما اور کارکنان کو متاثرین کی مدد کرنے اور زخمیوں کو بہترعلاج مہیا کرنے کی ہدایت کی ہے۔تفصیلات کے مطابق روہڑی کے قریب واقع ایشیاء کی سب سے بڑی کھجور منڈی آغا قادر داد زرعی مارکیٹ میں واقع ایک گودام کی چھت دھماکے سے اس وقت گری جب مزدور وہاں کام میں مصروف تھے جس کے نتیجے میں ملبے تلے دب کر 6 خواتین اور ایک بچے سمیت 11 افراد جاں بحق اور متعدد زخمی ہوگئے جن میں سے چار افراد کا تعلق ایک ہی خاندان سے تھا۔ دھماکے کے وقت بھٹی میں 60 سے زائد مزدور موجود تھے، جو چھت گرنے سے ملبے تلے دب گئے۔واقعے کی اطلاع ملتے ہی ایدھی سمیت دیگر رضاکار تنظیموں کے کارکن جائے وقوع پر پہنچ گئے اور جاں بحق افراد سمیت تمام زخمیوں کو روہڑی اور سکھر کے سول اسپتال منتقل کردیا گیا جہاں اسپتال ذرائع نے 11 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کی۔کھجور مارکیٹ میں گودام کی چھت گرنے کے واقعے کے بعد امدادی کام کے لیے پاک فوج اور رینجرز کے جوان بھی پہنچ گئے۔امدادی کارکنوں کی جانب سے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے اور کہا گیا ہے کہ بڑی تعداد میں مزدور ملبے دبے ہوئے ہیں۔ابتدائی معلومات کے مطابق گودام کی چھت پر چھوہاروں کی بوریاں رکھی گئی تھیں جبکہ نیچے کھجور پکانے والی بھٹی تھی جہاں دھماکا ہوا جس کے نتیجے میں چھت زمین بوس ہوگئی۔انتظامیہ کا کہنا ہے کہ اب بھی کچھ افراد ملبے تلے دبے ہوئے ہیں جنہیں نکالنے کی کوششیں جاری ہیں جب کہ جاں بحق ہونے والوں میں سے کچھ افراد کی شناخت ہوئی ہے جس میں 3 خواتین،2 مرد اور ایک بچہ شامل ہے۔ڈپٹی کمشنر سکھر رحیم بخش کے مطابق دھماکا چھوہارے دھونے والے کیمیکل میں آگ لگنے سے ہوا، حادثہ چار بجے کے قریب اس وقت پیش آیا جب مزدور یومیہ اجرت پر کام کررہے تھے۔کمشنر سکھر کے مطابق گودام ایک ماہ پہلے سیل کیا گیا تھا جو غیر قانونی طور پر کھلوایا گیا، گودام کے مالکان اور منشی فرار ہوگئے ہیں۔دوسری جانب گورنر سندھ محمد زبیر نے کھجور مارکیٹ سکھر میں چھت گرنے کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر سکھر سے اس کی رپورٹ طلب کرلی ہے۔انہوں نے واقعے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر افسوس کا اظہار کیا اور حادثے کے زخمیوں کو بہترین طبی امداد فراہم کرنے کی ہدایت کی۔ چیئرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سکھر میں چھت گرنے سے ہلاکتوں پر اظہار افسوس کرتے ہوئے پارٹی رہنما اور کارکنان کو متاثرین کی مدد کرنے اور زخمیوں کو بہترعلاج مہیا کرنے کی ہدایت کی ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...