کوئی پلاٹ ، کوٹہ یا قرض نہیں لیا ، جو کچھ کمایا سپریم کورٹ ، نیب میں تفصیلات جمع کر ادیں : سعدرفیق

کوئی پلاٹ ، کوٹہ یا قرض نہیں لیا ، جو کچھ کمایا سپریم کورٹ ، نیب میں تفصیلات ...

لاہور(نمائندہ پاکستان) وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ دونوں سیاسی جماعتوں کی حکومتوں نے اپنی ذمہ داری پوری نہیں کی ۔احتساب کا نعرہ لگانے والوں کے مقاصد کچھ اور تھے نیب میں جب بھی بلایاجائے گا جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ کچھ میڈیا چینلز نے بریکنگ نیوز کے چکر میں میرا اور فیملی کا میڈیا ٹرائل کیاہے اور انتخابات کے قریب قریب میڈیا ٹرائل مہم تیزی آرہی ہے ایسے خاندان کے خلاف احتساب کیاجارہاہے جس نے ملک کیلئے بے پناہ قربانیاں دی ہیں ۔ ہم نے کبھی کوئی پلاٹ کوٹہ یا قرض نہیں لیا جو کچھ کمایاسپریم کورٹ اور نیب میں تمام تر تفصیلات دیدی ہیں ۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ مجھے پاکستان کا کرپٹ ترین شخص بنا کر پیش کیا گیا ہے جو سمجھتے ہیں سیاستدانوں کا چہرہ کالاکیاجائے اور وہ لوٹتے ہیں ان لوگوں کا علاج نہیں کیاجاسکتا ہے ۔ہمیں کوئی سفارش نہیں کر سکتا باتیں نہیں کیں پرفارم کیا کوئی تنخواہ نہیں لی ٹی اے ڈی اے بھی نہیں لیا بلکہ خدا واسطے کام کیاہے۔عوام کی جتنی خدمت کرسکتے تھے ہم نے کی ہے اور آج ریلوے کے مردہ گھوڑے میں جان ڈالی ہے ۔میرا ضمیر مطمئن ہے اپنے کاموں پر دو سے تین ماہ سے کوئی توجہ نہیں دے رہا کیونکہ ایسے کاموں میں الجھا دیاگیا ہے انہوں نے مزید کہا کہ چور چور کہنا پیچھے بیٹھ کر ڈوریاں ہلانا اچھی بات نہیں ہے اس کا ملک کو فائدہ نہیں نقصان ہوا ہے ۔اگر ایک دوسرے سے دست گریباں ہوتے رہیں گے تو خرابی بڑھتی رہے گی دشمن ہم پر مسکرا رہاہے ۔دشمنوں کو ہنسنے کامشورہ نہیں دینا چاہیے ہم نہ لڑیں گے اور نہ ہی الجھیں گے بلکہ آئین و قانون کی بالادستی کی جنگ لڑتے رہیں گے ۔ خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ کوشش ہے ملک میں تصادم نہ ہو کوئی اس میں جیتے گا نہیں بلکہ سب ہار جائیں گے ملک کو انتشار اور افراتفری کی طرف نہ لے جائیں لوگوں کو فیصلہ کرنا دیں کس کو لانا ہے کس کو باہر کرنا قوم کو فیصلہ کرنا دیں ۔ انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس نے اعلی ظرفی کا مظاہرہ کیا خدا کا شکر ادا کریں اپنی ذات کیلئے نہیں انصاف آئین و قانون کی سربلندی کیلئے ملاقات کی ۔افوا ج پاکستان کو سکیورٹی عدلیہ کو انصاف اور انتظامیہ کو ملک چلانے کیلئے ملنا چاہیے کوئی ریلیف نہیں مانگا جارہا ۔ریاست جھگڑا کرکے تو نہیں چلانی آئین و قانون کے مطابق چلانی چاہیے ۔نیب پہلے سے ہی کالا قانون ہے گیلانی صاحب کو نکالا اس وقت بھی حمایت نہیں کی غلطیوں سے سکیھا ہے ۔ مزید برآں ان کا کہا تھا کہ اللہ نہ کرے ترین یا شیخ رشید کے ساتھ ایسا ہو کہ وہ نااہل ہوں ۔جنہیں جانے کی عادت ہے وہ ٹکتے نہیں نئی مسلم لیگ میں جانے والوں کو کوئی روک نہیں سکتا کنونشن مسلم لیگ پہلی بار نہیں یہ چلنے والی نہیں ہے میں تنہا فیصلے نہیں کرتا پوری وزارت ریلوے کرتی ہے نجکاری نہیں ہونی چاہیے کام سے اسے بچا لیا ہے ۔صفائی ستھرائی کا نظام آؤٹ سورس ہونا چاہیے کراچی اور لاہور میں واشنگ پلانٹس لائیں گے ٹرین ایکسرے مشین بھی منصوبے کا حصہ ہے ۔کوئی نواز شریف سے غلط فیصلے نہیں کرواتا فیصلوں پر بحث ہوتی ہے اکثریتی فیصلے کو ماناجاتاہے ۔چودھری نثار علی کو ن لیگ سے دور نہیں کیاجانا چاہیے قربت دوبارہ ہوجائے بہت قربانیاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آصف زرداری عمران خان کے گٹھ جوڑ سے دونوں کو نقصان ہو گا زیادہ نقصان عمران اور کم زرداری کا ہو گا عمران خان نے چئیرمین سینیٹ کیلئے پیپلزپارٹی کا ساتھ دیا ۔پی پی پی اور پی ٹی آئی کا اتحاد مان جائیں نہ شرمائیں چھپنے والی کوئی چیز نہیں ہے۔

سعدرفیق

لاہور(خبر نگار ) وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سے متعلق نیب لاہور میں اپنا بیان ریکارڈ کرادیا۔وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی کیس میں نیب لاہور کی جانب سے طلبی کا نوٹس ملنے پر گزشتہ روزپیش ہوئے جبکہ نیب نے ان کے بھائی صوبائی وزیر صحت خواجہ سلمان رفیق کوآج طلب کر رکھا ہے۔نیب ذرائع کے مطابق نیب کی تین رکنی ٹیم نے خواجہ سعد رفیق سے تحقیقات کیں اور انہوں نے نیب کی جانب سے دیے گئے سوالنامے کے جوابات دیے۔ پیشی سے قبل خواجہ سعد رفیق نے ایک ٹوئٹ بھی کی جس میں ان کا کہنا تھا کہ ایک اور پیشی، ایک اور طلبی۔ وزیر ریلوے نے اپنی ٹوئٹ کے ساتھ ایک تصویر بھی شیئر کی جس پر فیض احمد فیض کی غزل کے چند اشعار بھی درج تھے۔

وزیر ریلوے/نیب لاہور

مزید : صفحہ اول


loading...