ایم کیو ایم کی ارکان سندھ اسمبلی نائلہ منیر اور ناہید بیگمکی پی ایس پی میں شمولیت

ایم کیو ایم کی ارکان سندھ اسمبلی نائلہ منیر اور ناہید بیگمکی پی ایس پی میں ...

کراچی (اسٹاف رپورٹر)ایم کیوایم سے تعلق رکھنے والی اراکین اسمبلی نائلہ منیراورناہید بیگم نے پاک سر زمین پارٹی میں شمولیت اعلان کر دیا ہے یہ اعلان انہوں نے پی ایس پی کے چیئر مین مصطفی کمال اور صدر انیس قائم خانی کے ہمراہ پاکستان ہاوس میں پریس کانفرنس کر تے ہوئے کیا۔ اس مو قع پرپاک سر زمین پارٹی کے چیئر مین سید مصطفی کمال نے کہاکہ مردم شماری اور حلقہ بندیوں میں کراچی سے نا انصافی کی گئی ،انہوں نے ایم کیوایم پی آئی بی او ربہادر آباد کے ساتھیوں کو مخاطب کر تے ہوئے کہاکہ شہر سے نا انصافیوں کے خلاف مل کر جد وجہد کر تے ہیں، مل کر شہر کے نوجوانوں کے لئے نوکری اورتعلیمی اداروں میں داخلے کی بات کرتے ہیں ،انہوں نے کہاکہ ہم نے جو راستہ چنے اس کا مقصد بہت بڑا ہے آئیں مل کر دلوں کو صاف کر تے ہیں اور تمام لوگوں کی بھلائی کے لیے کام کرتے ہیں،شہر کچرا کنڈی بناہوا ہے، اسپتالوں میں دوا نہیں، اسکولوں میں تعلیم نہیں،بچےstunted growtth کا شکار ہے۔ ہم اس صوبے ، شہر او رتمام اضلاع کے لئے این ایف سی ایوارڈمیں جائز حصہ چاہتے ہیں،سندھ حکومت ایک ہزار ارب خرچ کر چکی ہے اب بھی یہ حال ہے کہ خوراک کی کمی وجہ سے روز بچے مررہے ہیں ہر سال 53ہزار بچے یعنی روزانانہ 145بچے گندہ پانی پینے کی وجہ سے مر رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ دو ایم پی اے ناہید بیگم اور نائیلہ منیر پی ایس پی میں شمولیت اختیار کر رہی ہیں انہوں نے کہاکہ میں مہاجروں کے لئے مشکلات بڑھنا نہیں چاہتا میں مہاجروں کو مشکلات سے نکالنا چاہتا ہوں کراچی فورٹ لائن ہے جہاں بھائی کو بھائی سے لڑایا گیا ہمیں ان کو ملانا ہے میں آرمی چیف سے ایک بار پھر درخواست کرتا ہوں جیسے آپ نے بلوچستان اور فاٹا میں نوجوانوں کو معاف کیا اسی طرح ایک بار کراچی اور حیدر آباد کے نوجوانوں کو بھی معاف کریں، پکا قلعہ اور علیگڑھ کے قاتل آج تک نہیں پکڑے گئے اسی طرح کے واقعات کوماضی میں بھی ملک دشمن طاقتوں نے استعمال کیا اورامزید کر سکتے ہیں ۔ایسے واقعات پر غصہ رکھنے والے نوجوانوں کے جذبات کو استعمال کیاجاتا ہے ان جونوانوں میں سے کوئی خود کش بمبار نہیں اور کوئی اے پی ایس جیسے واقعے کا دہشت گردنہیں ہیکیا۔ میں ان لڑکوں کو اپنی پارٹی میں شامل کرنے کے لئے کہہ رہا ہوں تو ہم آپ سے کہتے ہیں ہم ان میں سے کسی کوبھی اپنی پارٹی میں نہیں لینگوں درخواست ہے کہ ان بچوں کو ان کی ماوں کے حوالے کر دیں،انہوں نے کہاکہ ایم کیو ایم کا برانڈ بدنام ہو گیا ہے ایم کیو ایم کے نام سے جوڑ کر اس شہر کے باسیوں کو را کا ایجنٹ سمجھ لیا گیا آج سندھ میں بچے جاہل بڑے ہو رہے ہیں اندرون سندھ میں بچے مر رہے ہیں اورکراچی حیدرآباد کی آبادی کو کم کردیا گیا ہے ڈی لمیٹیشن میں کراچی کے ساتھ زیادتی کی گئی جس کے لئیے مل کر جدوجہد کرنی ضروری ہے یہ شہر لا وارث نہیں ہے اسکو لاورث سمجھنے والے احمقوں کی جنت میں رہتے ہیں انہوں نے کہاکہ جن لوگوں کو چوکیدار بنایا تھا انہوں نے ہی اس شہر کو لوٹا ہے آج 20 میں سے ستراا ایم این اے ایم کیوایم کے ہیں تو پھر کیوں اس شہر کا یہ حال ہے آج ججز بتا رہے ہیں کہ پانی زہریلا ہے آپ لوگوں نے کیوں ٹھیک نہیں کیا آج آبادی کم کرنے کا مسلہ سب سے بڑا مسئلہ ہے حکومت فہرستوں کو آویزاں کردیں جس کا نام ہے وہ خاموش ہوجایگا اور جو نہیں وہ اندراج کراے گا۔اس مو قع پر رکن سندھ اسمبلی نائیلہ منیرنے کہاکہ زمانہ طالب علمی سے اے پی ایس او میں تھی میں نے جتنا تحریک کو وقت دیا ایمانداری سے دیا ،میں دعوے سے کہتی ہوں میں نے ایمانداری سے کام کیا 22 اگست کے بعدیہی کوشش کرتے رہے کہ شائد ہم قوم کواس بحران سے نکال لیں لیکن ایم کیو ایم میں انفرادی سوچ ہے ،دوستیوں پر لوگوں کو نوازہ گیا،دو مہینے بہت کرب میں مبتلا تھی انہوں نے کہاکہ مصطفی کمال کراچی کی عوام کی امید ہیں اور میں مصطفی کمال کے ساتھ کھڑی ہوں پی ایس پی میں اجتماعیت کی ہے جس کا ایم کیوایم میں فقدان ہے ۔ رکن سندھ اسمبلی ناہید بیگم نے کہاکہ میرا تعلق ایک شہید کے خاندان سے ہے آج آٹھ سے سال سے لگا تار ایم پی اے ہیں موجودہ صورتحال میں ایم کیوایم سے ناامید ہوچکی ہیں ایم کیو ایم میں اقراباء پروری اور آپس کی چپقلش نے پارٹی کو تباہ کر دیا میرے لئے پی ایس پی سے بہترین پلٹ فورم کوئی اور نہیں ہوسکتا تھا مصطفی کمال اور انیس قائم خانی نے ثابت کیا ہے کہ وہی سندھ کے شہری علاقوں کے لئے بہت کچھ کر سکتے ہیں۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...