افغان مشیر کے بیان سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں، افغانستان میں کالعدم گروہوں کے محفوظ ٹھکانے ہیں: پاکستان

افغان مشیر کے بیان سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں، افغانستان میں کالعدم گروہوں ...
افغان مشیر کے بیان سے تعلقات خراب ہوسکتے ہیں، افغانستان میں کالعدم گروہوں کے محفوظ ٹھکانے ہیں: پاکستان

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر فیصل نے کہا ہے کہ افغانستان کے مشیر قومی سلامتی کا بیان پاک افغان تعلقات پر منفی تاثر پیدا کرسکتا ہے،افغانستان میں کالعدم گروہوں کے محفوظ ٹھکانے ہیں۔

ہفتہ وار بریفنگ دیتے ہوئے ڈاکٹر فیصل نے کہا ہے کہ کالعدم گروہوں نے پاک افغان سرحد پرافغانستان میں محفوظ پناہ گاہیں قائم کررکھی ہیں، داعش پاکستان،ایران، وسطی ایشیا اور ایران کی سرحدوں کے قریب مضبوط ہورہی ہے۔افغان صدرکی دعوت پروزیراعظم شاہد خاقان جلد افغانستان کا دورہ کریں گے جس کی تاریخ کا اعلان جلد کیا جائے گا۔

ترجمان نے کہا کہ افغانستان کے مشیر قومی سلامتی کا بیان پاک افغان تعلقات پر منفی تاثر پیدا کرسکتا ہے۔ترجمان دفتر خارجہ نے بنگلا دیش سے متعلق کہا کہ بنگلا دیش کی جانب سے جارحانہ بیانات قابل مذمت ہیں۔ڈاکٹر فیصل نے بتایا کہ پاک بھارت آبی تنازع پر 29 سے 31 مارچ تک پاکستانی انڈس واٹر کمشنربھارت کا دورہ کریں گے۔

یادرہے کہ افغانستان کے مشیر قومی سلامتی محمد حنیف نے واشنگٹن میں اپنے ایک بیان میں کہا تھا کہ ٹرمپ انتظامیہ کی جنوبی ایشیا میں دہشت گردوں کے تشدد کو کم کرنے کی حکمت عملی پر پاکستان کی طرف سے کوئی مثبت ردعمل نہیں ہے.

مزید : قومی


loading...