یہ عورت دماغ کے آپریشن کے دوران بانسری کیوں بجارہی ہے؟ انتہائی دلچسپ وجہ جانئے

یہ عورت دماغ کے آپریشن کے دوران بانسری کیوں بجارہی ہے؟ انتہائی دلچسپ وجہ ...
یہ عورت دماغ کے آپریشن کے دوران بانسری کیوں بجارہی ہے؟ انتہائی دلچسپ وجہ جانئے

  


ہیوسٹن(نیوز ڈیسک)دماغ کے آپریشن کا سن کر ہی انسان کا دماغ سن ہونے لگتا ہے لیکن امریکی ریاست ٹیکساس کے ایک ہسپتال میں ایک خاتون مریضہ اس وقت بانسری بجاتی رہی جب ڈاکٹر اس کے دماغ کا آپریشن کررہے تھے۔

میل آن لائن کے مطابق اینا ہینری نامی یہ خاتون بانسری بجانے کی ماہر ہیں اور جب میموریل ہرمن ہسپتال ہیوسٹن میں ان کا آپریشن جاری تھا تو وہ پوری طرح اپنے ہوش و حوا س میں تھیں۔ وہ ایک وراثتی بیماری کی شکار ہیں جس کی وجہ سے انہیں ہاتھوں میں رعشہ کا مسئلہ لاحق ہے۔ چونکہ اب ان کے ہاتھ مسلسل کانپنے لگے تھے لہٰذا ان کے لئے بانسری بجانا بھی مشکل ہوگیا تھا۔ اینا کے دماغ کے گہرے ترین حصوں کو متحرک کرنے کے لئے ڈاکٹروں نے الیکٹروڈز اور دیگر میڈیکل مشینری کا استعمال کیا اور اس دوران اینا سے بانسری بجانے کو کہا تاکہ وہ دماغ میں مصنوعی طریقے سے پیدا کی جانے والی تحریک کے اثرات دیکھ سکیں۔

اینا کا کہنا تھا کہ وہ نوعمری سے ہی ہاتھ کانپنے کے مسئلے کا سامنا کررہی تھیں لیکن وقت گزرنے کے ساتھ اس میں شدت آگئی تھی۔ وہ کچھ کوشش کرکے ہاتھوں کے ارتعاش پر قابو تو پاسکتی تھیں لیکن اس کے لئے انہیں مسلسل جدوجہد کرتے رہنا پڑتی تھی۔ ایک عرصے تک وہ دماغ کے آپریشن کو ٹالتی رہیں لیکن اب مسئلہ اتنا سنگین ہوگیا تھا کہ بالآخر انہیں یہ آپریشن کروانا ہی پڑا۔ اس آپریشن کے دوران ڈاکٹروں نے انہیں مکمل ہوش و حواس میں رکھا اور ان سے بانسری بجانے کو کہا تاکہ یہ معلوم ہوسکے کہ ان کے دماغ کے اندر پیدا کی گئی سٹیمولیشن کے ان کے افعال پر کیا اثرات مرتب ہورہے تھے۔ ڈیپ برین سٹیمولیشن کی یہ تکنیک دماغی بیماری پارکنسنز کے علاج میں بھی استعمال ہوتی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...