تعلیمی اداروں میں سگریٹ نوشی وفاقی ، صوبائی حکومت کو دوبارہ نوٹس

تعلیمی اداروں میں سگریٹ نوشی وفاقی ، صوبائی حکومت کو دوبارہ نوٹس

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے تعلیمی اداروں میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے لئے دائر درخواست پر وفاقی اور صوبائی (بقیہ نمبر37صفحہ7پر )

حکومت کودوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا ہے۔جسٹس عائشہ اے ملک نے کیس کی سماعت کی، درخواست گزار کی جانب سے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ تعلیمی اداروں میں سگریٹ نوشی پر پابندی کے قانون پر عمل نہیں کیا جا رہا،نوجوان نسل منشیات کے ذریعے تباہ ہورہی ہے ،حکومت کی جانب سے منشیات کے عادی افراد کی بحالی کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے جا رہے،سپریم کورٹ نے تعلیمی اداروں میں منشیات اور سگریِٹ نوشی کے خلاف سخت اقدامات کا حکم دے رکھاہے ، سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق عمل درآمدنہیں کیا جا رہا،متعلقہ افسروں کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی عمل میں لائی جائے ،سرکاری وکیل نے جواب داخل کرنے کے لئے مہلت کی استدعا کی گئی جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے وفاقی اور صوبائی حکومت کودوبارہ نوٹس جاری کرتے ہوئے ایک ہفتے تک جواب طلب کر لیا ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر