اسلام فوبیا کی سب سے بڑی وجہ غیر مسلموں کا تیزی سے اسلام میں داخل ہوناہے:سینیٹر ساجد میر

اسلام فوبیا کی سب سے بڑی وجہ غیر مسلموں کا تیزی سے اسلام میں داخل ...
اسلام فوبیا کی سب سے بڑی وجہ غیر مسلموں کا تیزی سے اسلام میں داخل ہوناہے:سینیٹر ساجد میر

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر علامہ ساجد میر نے کہا ہے کہ اسلام فوبیا کا شکار طاغوتی قوتوں کامسلمانوں کے خلاف شدت آمیز رویہ افسوس ناک ہے،اسلام فوبیا کی سب سے بڑی وجہ غیر مسلموں کا تیزی سے اسلام میں داخل ہوناہے،دہشت گردی کا کسی ملک، دین اور شہریت سے کوئی تعلق نہیں ، اسلامی ممالک اور مسلمان دہشت گردی کا سب سے زیادہ نشانہ بنے ہیں،نیوزی لینڈ کا سانحہ اس کی تازہ مثال ہے ۔

ام الہدی مسجد فتح گڑھ میں اجتما ع سے خطاب کرتے ہوئے سینیٹر ساجد میر کا کہنا تھا کہ انگلستان اور ولیز میں تازہ مردم شماری کے مطابق پانچ سال تک کی عمر کے ہر دس بچوں میں سے ایک مسلمان ہے، قومی اعداد و شمار کے دفتر کے مطابق ساڑھے چار سال تک کی عمر کے کل ساڑھے تین ملین بچوں میں سے تقریبا تین لاکھ بیس ہزار بچے مسلمان ہیں، مسلمان بچوں کی شرح 9فیصدی ہے۔پروفیسر علامہ ساجد میر نے مزید کہا کہ اسلام فوبیا کے شکار، انتہاپسند عناصر کی جانب سے مساجد پر حملے، گستاخانہ خاکے، نعوذ باللہ توہین رسالت ﷺ اور قرآن کریم کی بے حرمتی جیسے واقعات کو اظہار رائے آزادی کا نام دیکر مسلم امہ کے خلاف نفرت کو پروان چڑھانے کا موقع مغرب نے خود فراہم کیا، جس کے بعد ان ممالک نے پڑھی لکھی عوام نے ازخود اسلام کا مطالعہ شروع کیا اور روشنی حاصل کرنے والوں کو اللہ تعالی نے راستہ دکھایا کہ اب یہ کہا جارہا ہے، اگلے چند سالوں میں یورپ مسلمانوں کے زیر نگیں اس لیے ہو جائے گا کیونکہ اسلام تلوار سے نہیں بلکہ افکار سے تیزی کے ساتھ پھیل رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے خلاف یکطرفہ پروپیگنڈا کرکے انھیں شدت پسند، انتہا پسند اور دہشت گرد ثابت کرنے کے لیے بار بار مسلم ممالک میں مہم جوئی کی جاتی ہے لیکن جتنی قوت سے مغرب استعماری قوتیں جارحیت کرتی ہیں انھیں اسی شدت کے ساتھ شکست کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں جب کسی اقلیت کے خلاف کسی مسلم شخص یا گروہ کے خلاف دانستہ یا نادانستہ کوئی کاروائی ہوجاتی ہے تو سول سوسائٹی سمیت سیاسی و مذہبی جماعتیں تک مذمت میں اتنا آگے چلے جاتے ہیں کہ انھیں پوری دنیا میں مسلمانوں پر ہونے والے ظلم تک دکھائی نہیں دیتے،صرف پوائنٹ سکورنگ کے لیے یا مغرب کی خوشنودی کے لیے اپنی حدود تک پھلانگ جاتے ہیں۔ پروفیسر ساجد میر نے کہا کہ کسی شخص کے انفرادی فعل کو پوری مسلم امہ پر تھوپنے کی کوشش کی جاتی ہے اور رائی کا پہاڑ بنا کر اسلام مخالف قوتیں اپنے مقاصد کو حاصل کرنے کے لیے کسی کو بھی،اور کسی بھی واقعے کو استعمال کرتی ہیں۔ ا س موقع پر پروفیسر ساجد میر نے مرکزی جمعیت اہل حدیث ضلع لاہور کی کابینہ سے حلف بھی لیا ۔جس کے مطابق مولانا مشتاق فاروقی امیر اور ڈاکٹر ابراہیم سلفی ناظم ہوں گے ۔تقریب میں مولانا عبدالرشید مجاہد آبادی، پروفیسر عبدالرحمن لدھیانوی، حافظ عبدالغفار، رانا عبدالوحید، ڈاکٹر شہباز حسن ،قاری یایسن طہ سمیت دیگر ذمہ داران بھی موجود تھے ۔

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور