کورونا وائرس بھی جنگ نہ روک سکا کرفیو لگے سعودی دارالحکومت پرمیزائل حملہ، یمن میں ڈرون تباہ

کورونا وائرس بھی جنگ نہ روک سکا کرفیو لگے سعودی دارالحکومت پرمیزائل حملہ، ...
کورونا وائرس بھی جنگ نہ روک سکا کرفیو لگے سعودی دارالحکومت پرمیزائل حملہ، یمن میں ڈرون تباہ

  

ریاض(وقار نسیم وامق)کورونا وائرس سے دنیا رک گئی مگر یمن اور عرب ممالک میں جاری جنگ نہ رک سکی، سعودی دارالحکومت ریاض پر بیلسٹک میزائل سے حملہ کیا گیا ہے جسے سعودی فورسز نے فضا میں ہی تباہ کرکے ناکام بنادیا ہے۔

دوسری جانب یمن کی جوائنٹ فورسز نے الحدیدہ شہر پر پرواز کرنے والا حوثی باغیوں کا ڈرون بھی تباہ کردیا ہے۔

فرانسیسی خبررساں ادارے کے مطابق سعودی عرب کے کرفیو لگے دارالحکومت ریاض پر بیلسٹک میزائل حملہ کیا گیا۔ حملے کی ذمہ داری تاحال کسی نے قبول نہیں کی تاہم ایرانی حمایت یافتہ حوثی باغی اس سے قبل کئی بار ایسی کارروائیاں کرچکے ہیں۔

ذرائع کے مطابق یمن سے حوثی باغیوں کی جانب سے رات گئے دو بیلسٹک میزائل سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض کی جانب داغے گئے، سعودی ائیر ڈیفنس نے دونوں میزائلوں کو کامیابی سے فضا میں تباہ کرتے ہوئے بہترین دفاع کیا۔ باغیوں نے کورونا وائرس کی صورتحال سے جنگ بندی کے باوجود سعودی عرب کے دارالحکومت پر بیلاسٹک میزائلوں سے حملہ کیا جبکہ سعودی ائیر ڈیفنس سسٹم نے کامیابی سے دونوں میزائلوں کو فضا میں ہی تباہ کر دیا جس سے ریاض کی شہری آبادی محفوظ رہی جبکہ دھماکوں کی آوازوں سے شہر لرز اٹھا. اطلاعات کے مطابق حوثی باغیوں کی جانب سے ایک میزائل سعودی عرب کے جنوبی شہر جیزان پر بھی داغا گیا اسے بھی سعودی ائیر ڈیفنس سسٹم نے فضا میں تباہ کرتے ہوئے جیزان شہر کا کامیاب دفاع کیا. سعودی عرب میں مقیم پاکستانی کمیونٹی کے بیشتر افراد نے حوثی باغیوں کی جانب سے اس حملہ کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ سعودی عرب کے دفاع میں پاکستانی کمیونٹی سعودی شہریوں کے شانہ بشانہ ہے.

ستمبر 2019 میں سعودی تیل کی تنصیبات پر حملے کے بعد سعودی عرب کیخلاف ہونے والی یہ پہلی بڑی کارروائی ہے۔

سعودی عرب کے سرکاری ٹی وی الاخباریہ کے مطابق سعودی عرب کی قیادت میں لڑنے والےعرب اتحاد نے بھی صرف حملے کا بتایا ہے یہ نہیں کہا کہ اس کے پیچھے کس کا ہاتھ ہے۔

  اے ایف پی کے مطابق کوروناوائرس سے بچاو کیلئے سعودی دارالحکومت ریاض میں پندرہ گھنٹوں کیلئے کرفیو نافذ کیا گیاہے اسی دوران حملہ کیا گیا جبکہ تین زور دار دھماکے بھی سنائی دیئے۔

دوسری جانب العربیہ اردو نے دعویٰ کیا ہے کہ  یمن میں جوائنٹ سیکیورٹی فورسز نے کل ہفتے کے روز ساحلی شہر الحدیدہ میں حوثی ملیشیا کا ایک اور ڈرون طیارہ مار گرایا۔ یہ طیارہ جنوبی الحدیدہ میں الدریھی کی فضاء میں فائرنگ کرکے گرایا گیا جس کے بعد گذشتہ 8 روز میں الحدیدہ میں مار گرائے ڈرون طیاروں کی تعداد 4 ہوگئی ہے۔

یمن کی جوائنٹ فورسز کے شعبہ اطلاعات کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہےکہ ایک ڈرون طیارے کوحوثی ملیشیا کی طرف سے الدریھمی کی فضاء میں اڑایا جا رہا تھا۔ ڈرون طیارے کو دیکھتے ہی فورسز نے اسر پرفائرنگ شروع کردی جس کے نتیجے میں طیارہ تباہ ہو کر زمین پرآگرا۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ الحدیدہ میں حوثیوں کی طرف سے ڈرون طیاروں کی مسلسل پروازیں اقوام متحدہ کی طرف سے جنگ بندی معاہدے کی کھلی خلاف ورزی ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -عرب دنیا -کورونا وائرس -