ملک بھر کی نجی یونیورسٹیز نے ایسا کام شروع کر دیا کہ والدین بھی خوشی سے نہال ہو گئے

ملک بھر کی نجی یونیورسٹیز نے ایسا کام شروع کر دیا کہ والدین بھی خوشی سے نہال ...
ملک بھر کی نجی یونیورسٹیز نے ایسا کام شروع کر دیا کہ والدین بھی خوشی سے نہال ہو گئے

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)کرونا وائرس کی وجہ سے جہاں ملک بھر کے تعلیمی ادارے بند ہیں تو وہیں نجی جامعات نے ملک میں پھیلی غیر یقینی صورتحال جس میں تعلیمی اداروں کی بندش کے متعلق کچھ بھی حتمی نہیں ہے کہ معمول میں آنے میں کتنا عرصہ درکار ہے? اس سے نمٹنے کےلئے اس کڑے وقت کو چیلنج سمجھ کر اس سے بھرپور استفادہ شروع کر دیا۔اکثر پرائیویٹ یونیورسٹیوں نے آن لائن تعلیمی و تدریسی سرگرمیاں شروع کر کے ہائر ایجوکیشن کمیشن کی دی گئی گائیڈ لائن پر فوری عملدرامد کیا ہے۔آن لائن کلاسز میں 95 فیصد حاضری سے طلبا کی دلچسپی کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔طلباءاور والدین نے نجی یونیورسٹیوں کی آن لائن سروسز پر انتظامیہ کاشکریہ ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ صورتحال میں نجی یونیورسٹیز طلباءکاتعلیمی نقصان بچاکرایک قومی خدمت سرانجام دے رہی ہیں۔ایسوسی ایشن آف پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان نے چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن کے تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ وہ مشکل کی اس گھڑی میں حکومت کے ساتھ کھڑی ہیں۔

تفصیلات کے مطابق کرونا کی وباءکے پھیلاﺅ کی وجہ سے حکومت کی جانب سے 13 مارچ سے ملک بھر کے تعلیمی ادارے بند کرنے کا اعلان کیا گیا۔بعد ازاں ہائر ایجوکیشن کمیشن کی جانب سے یونیورسٹیوں کو آن لائن کلاسز کا آغاز کرنے کےلئے گائیڈ لائن بھی جاری کی گئی۔ایچ ای سی کی جانب سے آن لائن کلاسز کی اجازت ملنے پر نجی یونیورسٹیوں نے فوری طور پر مثبت رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے برق رفتاری سے اپنے تدریسی امور میں جدت لاتے ہوئے انہیں آن لائن میں تبدیل کر دیا۔واضح رہے گزشتہ کئی سال سے ایم آئی ٹی،ہارورڈ ،کیمبرج اور آکسفورڈ جیسی دنیا کی بہترین یونیورسٹیوں میں بھی آن لائن طریقہ ہائے تدریس رائج ہے اور وہ بڑی کامیابی سے اس سے استفادہ بھی کر رہی ہیں۔ایچ ای سی کی ہدایات کی روشنی میں نجی جامعات کے اساتذہ اور طلبا نے آن لائن کلاسز کے سسٹم کو اپنا کر جہاں اپنی قابلیت کا اظہار کیا ہے وہیں اپنا قیمتی وقت ضائع ہونے سے بھی بچا رہے ہیں

۔علاوہ ازیں نجی یونیورسٹیوں نے اپنے کوالٹی اشورنس میکانزم کو بھی مضبوط کیا ہے جو بڑی کامیابی سے جاری ہے۔چیئرمین پرائیویٹ سیکٹر یونیورسٹیز پاکستان پروفیسر ڈاکٹر چوہدری عبدالرحمان نے وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود چیئرمین ہائر ایجوکیشن کمیشن پروفیسر ڈاکٹر طارق بنوری کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا ہے کہ نجی یونیورسٹیاں مشکل کی اس گھڑی می حکومت کے شانہ بشانہ کھڑی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اعلیٰ تعلیم ہمارے ملک کا اہم ترین شعبہ ہے جبکہ اساتذہ کا معاشرے کی تعمیر میں بہت اہم کردار ہے۔انہوں نے حکومت سے ایک بار پھر اساتذہ کے لئے ریلیف پیکج کی اپیل کی ہے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -