جرمنی میں کورونا کی وجہ سے معاشی مشکلات، وزیر خزانہ نے خود کشی کرلی

جرمنی میں کورونا کی وجہ سے معاشی مشکلات، وزیر خزانہ نے خود کشی کرلی
جرمنی میں کورونا کی وجہ سے معاشی مشکلات، وزیر خزانہ نے خود کشی کرلی

  

برلن (ڈیلی پاکستان آن لائن)جرمنی کے ریجن ہیسے سے تعلق رکھنے والے ریاستی وزیر خزانہ مردہ پائے گئے ہیں، امکان ظاہر کیا جارہا ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پرخود کشی کی ہے، ریاستی گورنر کاکہنا ہے کہ انہوں نے مبینہ طور پر کورونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والے معاشی بحران کے دباؤ کے باعث خود کشی کی ہے۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق جرمن چانسلر اینجلا مرکل کی کرسچن ڈیمو کریٹک یونین سے تعلق رکھنے والے ریاستی وزیر خزانہ تھامس شیفر فرینکفرٹ کے قریب  ہوچیم کے ریلوے ٹریک پر مردہ پائے گئے۔

پولیس اور پراسیکیوٹر کا کہنا ہے کہ جائے وقوعہ سے ملنے والے شواہد اور عینی شاہدین کے بیانات سے ہم اس نتیجے پر پہنچے ہیں کہ  54 سالہ وزیر خزانہ  نے اپنے ہاتھوں سے اپنی جان لی ہے۔

ریاستی گورنر ولکر بوفیئر کا کہنا ہےکہ آنجہانی شیفر کورونا وائرس کے بحران سے نمٹنے کیلئے دن رات کام کر رہے تھے، " ہمیں یہ تصور کرنا ہوگا کہ شیفر بہت زیادہ پریشان تھے، سب سے بڑھ کر پریشانی کی بات یہ ہے کہ کیاہم عوامی توقعات پر پورا اتر پائیں گے، بالخصوص مالی امداد کے معاملے میں ؟ میں یہ سمجھتا ہوں کہ انہی سوچوں نے شیفر کو بہت زیادہ پریشان کردیا تھا، اور انہیں اس کا کوئی حل نہیں مل رہا تھا، اس پر بہت زیادہ دباؤ تھا اسی لیے وہ ہمیں چھوڑ گیا، اس کی موت ملک کیلئے بہت بڑا صدمہ ہے۔"

مزید :

Breaking News -اہم خبریں -بین الاقوامی -کورونا وائرس -