کورونا وائرس کی تیسری لہر، ٹیسٹس کے نتائج انتہائی سست روی کا شکار

کورونا وائرس کی تیسری لہر، ٹیسٹس کے نتائج انتہائی سست روی کا شکار

  

الپوری(ڈسٹرکٹ رپورٹر) کرونا وائرس کی تیسری لہر، ٹیسٹس کے نتائج انتہائی سست روی کا شکار،شانگلہ کے ٹیسٹوں کا ایک ہفتے سے کرونا ٹیسٹ رزلٹ نہ مل سکیں۔اب تک تیسری لہر میں 29افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوسکی جبکہ 23مارچ سے اب تک کے بیجے گئے نمونوں کا رزلٹ محکمہ صحت کو نہ مل سکا۔سوات لیبارٹری پر رش کے باعث کرونا ٹیسٹوں کے رزلٹ میں دھیری تشویش ناک ہے،ٹیسٹ نمونے لینے کے بعد انھیں فوری لیبارٹری پہنچا کر 24گھنٹوں میں رزلٹ دینا لازمی ہے تاکہ مریض کو قرنطینہ کیاجاسکیں۔ماہرین صحت کا کہنا ہے کہ محکمہ صحت کرونا معاملے میں غیر سنجیدگی سے کام لے رہی ہے جو کہ متقبل کیلئے خطرناک ثابت ہوسکتی ہے۔شانگلہ میں کرونا کی تیسری لہر بے قابو نہیں اور نا ہی بڑی تعداد میں لوگ متاثر ہوئے تاہم احتیاطی تدابیر سمیت عوام کو اسی طرح احتیاط بھرتنی ہوگی۔محکمہ صحت کے ذمہ دار نے بتایا کہ کرونا کے پہلی لہر سے لیکر اب تک سرکاری طور پر کرونا کے مثبت کیسز کی تعداد 700تک ہیں تاہم تیسری لہر میں سرکاری طور پر کرونا سے کوئی بھی ہلاکت نہیں ہوئی اور انھوں نے بھی کرونا لیبارٹری پر رش کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں گزشتہ ایک ہفتے سے کوئی بھی رزلٹ موصول نہیں ہوا۔دوسری طرف عوامی حلقوں نے کرونا ٹیسٹنگ بہتر کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ جہاں حکومت لاک ڈاؤن اور تجارتی مراکز بند کرنے کے احکامات جاری کرتی ہے وہاں انھیں چاہیئں کہ کرونا ٹیسٹنگ نظام بہتر بنانے کیساتھ ساتھ ہر ضلعے میں لیبارٹری کا قیام عمل میں لایا جائے تاکہ لوگو ں کو اسانی پیدا ہوسکیں۔۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -