کوٹ ادو: یوٹیلٹی سٹور سے چینی‘ آٹا‘گھی غائب‘شہری خالی ہاتھ واپس

کوٹ ادو: یوٹیلٹی سٹور سے چینی‘ آٹا‘گھی غائب‘شہری خالی ہاتھ واپس

  

کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر)حکومت کی جانب سے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے دعوے دھرے،کوٹ ادو سٹی میں قائم یوٹیلیٹی اسٹورز پر چینی، آٹا اور گھی نایاب ہو گیا، اسٹورز کو اشیائے خورونوش کا کم کوٹہ ملنے پرصارفین کی لمبی لائنیں،مسائل مزید بڑھنے لگے، شہری اوپن مارکیٹ سے مہنگے داموں اشیا خریدنے پرمجبور،شہریوں کایومیہ کوٹہ بڑھانے کا مطالبہ،اس بارے تفصیل کے مطابق کوٹ ادو شہر کے وسط میں اے سی آفس کے قریب قائم یوٹیلٹی اسٹورز کو اشیائے خوردنی کا (بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

کم کوٹہ ملنے پرمسائل بڑھ گئے ہیں، حکومت کی جانب سے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے دعوے دھرے رہ گئے، شہر کے وسط میں قائم  ہونے کے باعث شہر یوں بڑی تعداد میں اس منی مارکیٹ یوٹیلیٹی سٹور پر گھی چینی اور آٹا سستے داموں خریدنے آتے ہیں گھی،چینی اور آٹا کی سپلائی کم مقدار ہونے کی وجہ مہنگائی میں پسی عوام گھی چینی اور آٹا سے محروم رہتے جاتے ہیں،20 کلو سرکاری آٹے کی قیمت 800 روپے تو مقرر ہے لیکن یوٹیلٹی اسٹوروں پر دستیاب نہیں، چینی کی فی کلو قیمت 68 روپے اور گھی 170 روپے فی کلو نرخ تو مقرر ہیں لیکن کم کوٹہ ہونے کی وجہ سے شہریوں کی لمبی قطاریں لگ جاتی ہیں،اکثر مردوخواتین گھی چینی لئے بغیر خالی ہاتھ گھروں کو لوٹ جاتے ہیں، شہریوں کا کہنا ہے کہ جن اشیاء کی قیمتیں مارکیٹ سے کم ہیں وہ سٹور میں ملتی نہیں، اس حوالے سے انچارج یوٹیلٹی سٹور اعجازخان نے پوچھنے پر بتایا کہ کہ منی مارکیٹ یوٹیلٹی سٹور کوٹ ادو شہرکا سٹور بڑاہے،یوٹیلٹی اسٹور میں چینی،گھی اورآٹا اوپن مارکیٹ کے مقابلے میں سستا ہے، اس وقت گھی 300کلو اور چینی 400کلو کی سپلائی آرہی ہیں تاہم آبادی زیادہ ہونے پرجلد ہی ختم ہوجاتے ہیں۔

واپس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -