مظاہرے کار سرکار میں مداخلت، قابضین قانونی راستہ اختیار کریں، ایگزیکٹو آفیسر کنٹونمٹ بورٹ ملتان 

مظاہرے کار سرکار میں مداخلت، قابضین قانونی راستہ اختیار کریں، ایگزیکٹو ...

  

 ٍبہاولپو ر(بیورو رپورٹ) کینٹ بورڈ کے دفتری امور ہمیشہ قانون و قواعد کے مطابق انجام دئیے جاتے ہیں  اگر سرکاری امور میں شفافیت نہ ہو تو یہ عوام کے حقوق کے ساتھ نا انصافی کے مترادف ہے    کینٹ بورڈ کی املاک سرکار کی ملکیت ہیں  ان کی آمدنی چھاؤنی  کی حدود میں آباد شہریوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی پر خرچ کی جاتی ہے  اپنی املاک کا تحفظ کینٹ بورڈ کی ذمہ داری ہے  حکومت پاکستان کی واضح پالیسی ہے کہ سرکاری املاک پر ناجائز قبضہ کسی صورت برداشت نہیں کیا جائیگا   کینٹ بورڈ نے(بقیہ نمبر24صفحہ6پر)

 اس حکومتی پالیسی پر عمل درآمد کو یقینی بنانا ہے  اسی تناظر میں جب کنٹونمنٹ بورڈ ملتان کی کینٹ پراپرٹیز کا جائزہ لیا گیا تو یہ تشویشناک بات سامنے آئی کہ  873 دکانوں  میں سے 83 دکانوں پر گزشتہ چالیس سالوں سے بھی زیادہ عرصے سے کچھ افراد ناجائز قابض ہیں۔ موجودہ انتظامیہ کنٹونمنٹ  بورڈ ملتان نے قیام پاکستان کے بعد سے تاحال ان تمام دکانوں کے تمام دفتری ریکارڈ کی از سر نو مکمل جانچ پڑتال کرنے سے یہ بات ثابت ہوئی کہ مذکورہ 83 دکانوں کے کھاتاجات  میں سیکورٹی اور پریمیم  کی ادائیگی بھی نہیں کی گئی تھی۔جب دفتر کنٹونمنٹ بورڈ نے ان کرایہ داروں کو جو درحقیقت غیر قانونی کرایہ دار ہیں کو قانونی نوٹس جاری کیے تو انہوں نے بجائے قانونی راستہ اختیار کرنے کے  غیرقانونی احتجاج  کا راستہ اختیار کیا۔ایگزیکٹو آفیسر کنٹونمنت بورڈ ملتان چودھری بابر حسین نے کہا کہ میں ان تمام ناجائز قابضین پر یہ بات واضح کر دینا چاہتا ہوں کہ ریاست کے کسی بھی ادارے کو اس کے قانونی کار منصب کی ادائیگی سے روکنے کے لیے بلیک میل کیا جا سکتا ہے نہ ہی  دبا میں لایا جا سکتا ہے۔ تمام غیر قانونی قابضین قانونی نوٹسوں کا قانون کے مطابق جواب دیں  مظاہرے اور احتجاج کار سرکار میں مداخلت کے مترادف اور قانون کی واضح خلاف ورزی ہے  مظاہرین قانونی راستہ اختیار کرتے ہوئے نوٹسوں کا جواب دیں  کنٹونمنٹ بورڈ ملتان کے دروازے ریاست پاکستان کے ہر اس شہری کے لئے کھلے ہیں جو قانون، اخلاق اور انصاف کا خواہشمند ہے۔ امید ہے کہ قانون کو ہاتھ میں لینے سے گریز کیا جائیگا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -