صوبے میں پانی کی قلت دور کرنے کیلئے  اہم فیصلے کرنا ہونگے‘ گورنر بلوچستان

    صوبے میں پانی کی قلت دور کرنے کیلئے  اہم فیصلے کرنا ہونگے‘ گورنر ...

  

اسلام آباد(پ ر)اس موقع پر گورنر بلوچستان امان اللہ یاسین زئی نے کہا ہے کہ صوبے میں پانی کی کمیابی کا مسئلہ حل کرنے کے لئے ہمیں بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے۔ غیرمتوازن انداز سے آبادی میں اضافے، شہری منصوبہ بندی کا فقدان اور شہری علاقوں کی طرف نقل مکانی کے ساتھ ساتھ کوئٹہ شہر میں (بقیہ نمبر20صفحہ6پر)

پناہ گزینوں کی بڑی تعداد میں آمد کے باعث پانی کے کم ذخائر کے اعتبار سے کوئٹہ شہر پر مزید دباؤ بڑھ چکا ہے۔ اس امر کا اظہار انہوں نے بلوچستان رورل سپورٹ پروگرام (بی آر ایس پی) کے زیر اہتمام پاکستان پاورٹی ایلیوئیشن فنڈ (پی پی اے ایف)، پی ایچ ای ڈی، واسا اور جی آئی زیڈ کے اشتراک سے کوئٹہ میں پانی کے عالمی دن کی مناسبت سے منعقدہ تقریب کے دوران بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر پانی کی اہمیت پر آگاہی واک کا انعقاد بھی کیا گیا جو میٹروپولیٹن آفس سے شروع ہوئی اور سیرینا ہوٹل پر منتج ہوئی۔ گورنر بلوچستان نے اس موقع پر مزید کہا کہ پی ایچ ای ڈی کوئٹہ میں ڈی سیلینیشن پلانٹ کی بحالی کے لئے کام کررہی ہے جبکہ ڈیمز کی تعمیر کے لئے کام کیا جارہا ہے جس سے آبی قلت کے شکار شہر میں پانی کی فراہمی کے حوالے سے سہولت میسر ہوگی۔ تقریب میں دوسروں کے علاوہ متعلقہ سرکاری شعبوں کے نمائندے، اساتذہ، طلبہ، سول سوسائٹی کے اراکین اور، میڈیا  کے نمائندوں نے شرکت کی۔ تقریب میں جرمن قونصل سندھ ہولگرر زیگلر، صوبائی سیکریٹری پی ایچ ای ڈی صالح نصر، اور پی پی اے ایف کی چیئرپرسن روشن خورشید بھروشہ نے بھی شرکت کی۔ بی آر ایس پی کے سی ای او نادر گل بڑیچ نے کہا، "بی آر ایس پی نے لوگوں کو بااختیار بنانے کے لئے کام کیا ہے تاکہ لوگ اپنے دیہات میں بی آر ایس پی کے مثالی کاموں کی پیروی کرسکیں۔ یہ پانی اور نکاس کے منصوبوں کے لئے بھی خاص طور پر اہمیت کے حامل ہیں۔ بی آر ایس پی اور جی آئی زیڈ سال 2030 تک اقوام متحدہ کے ترقیاتی ہدف 15 کے حصول کے لئے مسلسل کام کررہے ہیں۔" تقریب کے اعزازی مہمان سیکریٹری پی ایچ ای ڈی صالح نصر نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا، "کوئٹہ میں پانی کی فراہمی محدود ہے۔ کیسکو اور واپڈا کو شہر میں بجلی کی فراہمی میں مشکلات کا سامنا ہے اور وقتا فوقتا ٹیوب ویلز کو مجبوراََ بند کرنا پڑتا ہے۔ اس خطے کے اندر پانی کے ذخائر میں تیزی سے قلت کے پیش نظر درست سمت میں بروقت اقدام کی ضرورت ہے۔ مختلف ڈیمز کی تعمیر کے منصوبے پائپ لائن میں ہیں اور ہم پرامید ہیں کہ آنے والے سالوں میں ہم پانی کی طلب پوری کرنے کے قابل ہوسکیں گے۔

گورنر بلوچستان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -