’گیم آف تھرونز‘ میں کام کرنے والی مسلم اداکارہ کا شرمناک ماضی، پردہ اٹھاتو دنیا میں ہنگامہ برپاہوگیا

’گیم آف تھرونز‘ میں کام کرنے والی مسلم اداکارہ کا شرمناک ماضی، پردہ اٹھاتو ...
’گیم آف تھرونز‘ میں کام کرنے والی مسلم اداکارہ کا شرمناک ماضی، پردہ اٹھاتو دنیا میں ہنگامہ برپاہوگیا

  


نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ایچ بی او ٹی وی کی ایک سیریز میں بادشاہ کی کنیز کا کردار ادا کرنے اور ”گیم آف تھرونز“ میں کام کرنے والی مسلم اداکارہ ساحرہ نائٹ کے ماضی سے پردہ اٹھنے پر ایسا شرمناک انکشاف ہوا کہ دنیا میں ہنگامہ برپا ہو گیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ ساحرہ نائٹ ماضی میں فحش فلموں میں بھی کام کر چکی ہے اور وہ پہلی مسلمان اداکارہ تھی جس نے برطانوی فحش فلم انڈسٹری میں کام کیا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق ساحرہ نائٹ کا اصل نام سعیدہ وورا جی ہے۔ اس کے ماں باپ 1960ءمیں بھارتی ریاست گجرات سے لندن منتقل ہو گئے تھے جہاں اس کی پیدائش ہوئی۔ سعیدہ نے محض 6ماہ تک فیشن انڈسٹری میں کام کیا اور اس کے بعد اس شرمناک کام کی طرف آ گئی ۔ابتداءمیں اس نے اپنے کام کو چھپا کر رکھا تاکہ اس کے والدین کو پتا نہ چل سکے، تاہم اس کے ایک رشتہ دار نے انٹرنیٹ پر اس کی ویڈیو دیکھ کر اس کے والدین کو آگاہ کر دیا جنہوں نے سعیدہ سے قطع تعلقی اختیار کر لی مگر اس نے یہ قبیح کام جاری رکھا۔اس وقت جب رشتہ داروں اور علاقے کے دیگر مسلمانوں کو اداکارہ کی اس حرکت کا علم ہوا تووہ اس کے والدین سے شدید نفرت کرنے لگے تھے، مگر اداکارہ نے یہ کام جاری رکھا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...