(ن) لیگ کے دور میں قرضے 31ارب ڈالر تک بڑھ گئے،کامران سیف

(ن) لیگ کے دور میں قرضے 31ارب ڈالر تک بڑھ گئے،کامران سیف

  



لاہور(جنرل رپورٹر)مسلم لیگ ق کے راہنما وسیکرٹری اطلاعات لاہور میاں کامران سیف نے کہا ہے کہ ن لیگی 5سالہ دور اقتدار میں قرضے 31ارب ڈالر تک بڑھ گئے جبکہ105ارب روپے کا تجارتی خسارہ ہوا اور ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں20فیصد کمی ہوئی جو تشویشناک امر ہے ن لیگ کے دور میں توانائی بحران شدید تر ہوا، لوڈ شیڈنگ میں اضافہ کے ساتھ ساتھ مہنگائی میں بھی بدترین اضافہ ہوا اسٹیٹ بینک کی نئی مانیٹرنگ رپورٹ میں بھی حکومتی اقدامات کے باعث مہنگائی میں مزید اضافہ کی پیش گوئی کی گئی ہے جو بیڈ گورننس کی انتہا ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے مسلم لیگ ہاؤس میں کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔میاں کامران سیف نے کہا کہ ن لیگ کے5سالہ اقتدار میں عوام ریلیف کو ترستے رہے لیکن عوام کو ریلیف کی بجائے میگا پراجیکٹ میں کرپشن کے ہولناک ریکارڈ قائم ہوتے رہے جن پر نیب تحقیقات کررہا ہے تو حکومتی جانب سے کہا جاتا ہے کہ حکومت کے خلاف امتیازی سلوک برتا جارہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کے دوران غیر ملکی قرضوں میں31ارب ڈالر کا اضافہ ہوا جو پاکستان کی تاریخ میں میں کسی بھی حکومت کے دور میں غیر ملکی قرضوں میں اضافوں کا ایک نیا ریکارڈ ہے ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت نے اقتدار میں آنے سے قبل غیر ملکی امداد قبول نہ کرنے اور کشکول توڑنے کا دعویٰ کیا تھا کشکول تو نہیں ٹوٹا البتہ اس کا سائز ضرور بڑا ہوگیا اور پاکستان کا بچہ بچہ قرضوں کے جال میں جکڑ دیا گیا ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...