معمولی تیزی‘ انڈیکس میں 64پوائنٹس کا اضافہ ریکارڈ

معمولی تیزی‘ انڈیکس میں 64پوائنٹس کا اضافہ ریکارڈ

  



کراچی (کنامک رپورٹر)پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں کاروباری ہفتے کے پہلے روز پیرکو اتار چڑھاؤ کے بعد تیزی رہی اور کے ایس100انڈیکس کی42100کی نفسیاتی حدبحال ہوگئی،سرمایہ کاری مالیت میں 30 ارب 66کروڑ روپے سے زائدکااضافہ،کاروباری حجم گزشتہ روز کی نسبت27.04فیصدزائد جبکہ56.26فیصد حصص کی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیاگیا۔فروخت کے دباؤ اور پرافٹ ٹیکنگ کے باعث کاروبار کا آغاز منفی زون میں ٹریڈنگ کے دوران ایک موقع پر کے ایس ای100انڈیکس 41872پوائنٹس کی نچلی سطح پر ریکارڈ کیاگیا۔تاہم حکومت اور اپوزیشن جماعتوں جانب سے جسٹس (ر) ناصرالملک کی بطور نگراں وزیراعظم کی نامزدگی کی خبروں کے بعد حکومتی مالیاتی اداروں اور مقامی بروکریج ہاؤسز سمیت دیگرانسٹی ٹیوشنز کی جانب سے توانائی، بینکنگ، فوڈز،سیمنٹ اوردیگرمنافع بخش سیکٹر میں خریداری کی گئی، جس کے نتیجے میں مندی کے اثرات زائل ہوگئے اور ٹریڈنگ کے دوران کے ایس ای 100 انڈیکس 42543پوائنٹس کی بلند سطح پر بھی دیکھا گیاتاہم سیاسی افق پر چھائی بے یقینی کی کیفیت کے باعث مقامی سرمایہ کار گرپ تذبذب کاشکار نظرآئے اورسائیڈ لائن رہنے کو ترجیح دی ، جس کے نتیجے مارکیٹ اتار چڑھاؤ کا شکار رہی ۔کے ایس ای 100 انڈیکس 64.49پوائنٹس اضافے سے 42138.58 پوائنٹس پر بندہوا۔

ماہرین کے مطابق نگراں سیٹ اپ کے لیے حکومت اور اپوزیشن کے درمیان اتفاق رائے اور جسٹس (ر)ناصر الملک کی بطور نگراں وزیراعظم نامزدگی پر تمام جماعتوں کی جانب سے اتفاق اور اس کا خیرمقدم کرنے کے مارکیٹ پر مثبت اثرات مرتب ہوئے ہیں،سرمایہ کاروں نے سیاسی قیادت کی جانب سے نگراں حکومت کے معاملے پر بالغ نظری کا مظاہرہ کرنے کو ملک کے لیے نیک شگون قرار دیا۔پیر مجموعی طور پر343کمپنیوں کے حصص کاکاروبار ہوا، جن میں سے193کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں اضافہ،126کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں کمی جبکہ22کمپنیوں کے حصص کے بھاؤ میں استحکام رہا۔سرمایہ کاری مالیت میں30ارب66کروڑ26لاکھ 1ہزار62روپے کااضافہ ریکارڈ کیاگیا جبکہ سرمایہ کاری کی مجموعی مالیت بڑھ کر کر87کھرب62ارب10کروڑ80لاکھ76ہزار773روپے ہوگئی۔پیر کو13کروڑ93لاکھ41ہزار190شیئرزکا کاروبار ہواجوجمعہ کی نسبت2کروڑ66لاکھ63ہزار680شیئرززائدہیں۔قیمتوں کے اتار چڑھاؤ کے حساب سے رفحان میظ کے حصص سرفہرست رہے، جس کے حصص کی قیمت398.00روپے اضافے سے8398.00روپے اوریونی لیور فوڈز کے حصص کی قیمت331.00روپے اضافے سے8699.00روپے ہوگئی۔نمایاں کمی باٹاپاک کے حصص میں ریکارڈ کی گئی، جس کے حصص کی قیمت46.33روپے کمی سے2003.67روپے اوروائتھ پاک لمیٹڈ کے حصص کی قیمت20.00روپے کمی سے1460.00روپے ہوگئی۔پیر کوپاک الیکٹرون کی سرگرمیاں ایک کروڑ61لاکھ29ہزارشیئرزکے ساتھ سرفہرست رہیں، جس کے شیئرزکی قیمت2.28روپے اضافے سے35.88روپے اورٹی آرجی پاک لمیٹڈ کی سرگرمیاں93لاکھ52ہزار500شیئرزکے ساتھ دوسرے نمبرپررہیں، جس کے شیئرزکی قیمت69پیسے اضافے سے26.42روپے پر بندہوئی۔پیرکوکے ایس ای30انڈیکس13.28پوائنٹس کمی سے20606.92پوائنٹس، کے ایم آئی30انڈیکس72.83پوائنٹس کمی سے71468.30پوائنٹس جبکہ کے ایس ای آل شیئرزانڈیکس114.40پوائنٹس اضافے سے 30833.11پوائنٹس پر بندہوا۔

مزید : کامرس