فیض آباد دھرنے کی رپورٹ قومی اسمبلی میں کورم کی نشاندہی کی وجہ سے پیش نہ ہو سکی

فیض آباد دھرنے کی رپورٹ قومی اسمبلی میں کورم کی نشاندہی کی وجہ سے پیش نہ ہو ...

  



اسلام آباد (صباح نیوز) فیض آباد دھرنے کی تحقیقات میں حکومتی ناکامی کی رپورٹ پیر کو قومی اسمبلی میں کورم کی نشاندہی کی وجہ سے پیش نہ ہو سکی حکومت کی طرف سے اس معاملے پر اہم بیان آنا تھا توجہ مبذول کرانے کے نوٹس کی محرک جماعت ہی نے کورم کی نشاندہی کر دی قومی اسمبلی کے گزشتہ روز کے ایجنڈے پر پاکستان تحریک انصاف کے ارکان غلام سرور خان اور انجنیئر حامد الحق خلیل کا اس معاملے پر توجہ مبذول کرانے کا نوٹس شامل تھا نوٹس میں کہا گیا تھا کہ متذکرہ ارکان یا وزیر برائے داخلہ کی توجہ عوام میں گہری تشویش کا باعث بننے والے فوری عوامی اہمیت کے معاملہ کی جانب مبذول کرائیں گے جو فیض آباد دھرنے میں نامعلوم شخص کی فائرنگ سے کئی بیگناہ جانوں کے ضیاع پر منتج ہونیو الے واقعہ کی تفتیش کرنے میں حکومت کی ناکامی سے متعلق ہے گزشتہ روز سپیکر ترتیب سے ایجنڈا آئٹم لے رہے تھے متذکری ایجنڈا آئٹم کی باری آنیوالی تھی کہ نوٹس کی محرک جماعت کی رکن ڈاکٹر شیریں مزاری نے کورم کی نشاندہی کر دی جس سے یہ کاروائی ملتوی ہو گئی۔

فیض آباد دھرنے

مزید : صفحہ آخر


loading...