عالمی طاقتیں عام انتخابات کو سبوتاژ کرنا چاہتی ہیں م سکیورٹی خطرات ہیں ، سیکرٹری الیکشن کمیشن

عالمی طاقتیں عام انتخابات کو سبوتاژ کرنا چاہتی ہیں م سکیورٹی خطرات ہیں ، ...

  



اسلام آباد(آئی این پی ) سیکرٹری الیکشن بابر یعقوب فتح محمدنے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ میں انکشاف کیا ہے کہ عام انتخابات کے موقع پر بڑے پیمانے پر لاحق سکیورٹی خطرات الیکشن کمیشن کیلئے پریشانی کا باعث ہیں۔ عالمی طاقتیں عام انتخابات کو سبوتاژ کرنا چاہتی ہیں۔پولیس کی سکیورٹی ناکافی ہے،صوبوں کی طرف سے سکیورٹی کیلئے پاک فوج کی خدمات کا مطالبہ آ رہا ہے۔سکیورٹی خطرات پر کمیٹی کو ان کیمرہ بریفنگ دیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے رحمان ملک کے زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا۔سیکرٹری الیکشن کمیشن بابر یعقوب فتح محمدنے کمیٹی کو عام انتخابات کے سکیورٹی اقدامات پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ ملک میں 20ہزار پولنگ سٹیشن حساس قرار دئیے گئے ہیں۔جہاں کیمروں سے سکیورٹی اور الیکشن عملے کے نظم و نسق کو بھی مانیٹر کیا جا سکے گاجبکہ صوبائی چیف سیکرٹریز نے پولنگ سٹیشنوں کیلئے کیمروں کی فراہمی کی یقین دہانی کرائی ہے۔سینیٹ داخلہ کمیٹی نے کہا کہ الیکشن میں نتائج تبدیل کئے جاتے ہیں ۔پولنگ سٹیشنوں سے نتائج ریٹرننگ افسروں کے دفاتر لیجاتے ہوئے تبدیل کئے جاتے ہیں۔سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ ا لیکشن میں جھرلو نہیں پھرنا چاہیے۔ اس پر سیکرٹری الیکشن کمیشن نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ الیکشن نتائج کی مانیٹرنگ کا طریقہ کار بھی وضع کر لیا گیا ہے،کسی کو نتائج تبدیل کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔پریذائیڈنگ افسرپولنگ سٹیشن سے ہی فارم 45 پر رزلٹ درج کر کے اس کی تصویر الیکشن کمیشن کو بھیجے گا اور جو پریذائیڈنگ افسر فارم 45 کی تصویر نہیں بھیجے گا اس کیخلاف کارروائی کی جائے گی۔ چیئرمین نادرا نے کہا کہ الیکشن کروانے پر چار سال میں ہم نے بہت کام کیا ہے۔ آن لائن ووٹنگ کیلئے فنگر پرنٹ ڈیوائسسز کم قیمت ہوں تو فنگر پرنٹ پہچاننے میں مسئلہ ہو تا ہے۔ سپیشل سیکرٹری داخلہ رضوان ملک نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو فوج کی تعیناتی سے متعلق بر وقت آگاہ کرنا ہو گا۔وزارت داخلہ الیکشن کمیشن کیساتھ مکمل تعاون کرے گی جبکہ الیکشن کمیشن ووٹرز کے پولنگ سٹیشن تبدیل نہ کرنے کو یقینی بنائے۔سیکرٹری الیکشن کمیشن نے کہا کہ اس باراضافی بیلٹ پیپرز نہیں چھاپے جائیں گے، بیلٹ پیپرز سرکاری پریس سے چھپوائے جا ئیں گے۔بیلٹ پیپرز کی حفاظت کو یقینی بنایا جا ئے گا۔ سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو جہاں جہاں ہیلی کاپٹر کی ضرورت ہو تو کمیٹی ساتھ دیگی۔ سینیٹر رحمان ملک نے کہا کہ وہ سیاستدان جن کی زندگیاں خطرے میں ہیں ان کو مکمل سکیورٹی فراہم کی جائے۔پچھلے الیکشن میں وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے بیٹے کو اغوا کیا گیا تھا لہٰذا اس مرتبہ کوئی ناخوشگوار واقعہ رونما ہوا تو وزارت داخلہ ذمہ دار ہوگا۔سپیشل سیکرٹری داخلہ نے پولیس سکیورٹی حاصل کرنیوالی شخصیات کی تفصیلات کمیٹی کو فراہم کر دی۔ اجلاس کے آغاز میں کرنل سہیل عابد اور اتوار کوشہید ہونے پولیس اہلکاروں کیلئے فاتحہ خوانی کی گئی۔

بابر یعقوب

مزید : علاقائی


loading...