مقبوضہ کشمیر ، بھارتی فوج کی درندگی نہ رکی ، مزید 2نوجوان شہید ، متعدد زخمی، جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ ، ٹرین سروسز معطل ، تمام تعلیمی ادارے بھی بند

مقبوضہ کشمیر ، بھارتی فوج کی درندگی نہ رکی ، مزید 2نوجوان شہید ، متعدد زخمی، ...

  



سرینگر(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں )مقبوضہ کشمیر میں مقدس ماہ رمضان میں بھارت کی جانب سے جنگ بندی کا اعلان محض زبانی جمع خرچ نکلا، بھارتی فوج کی بربریت کو بریک نہ لگ سکے،دو کشمیری نوجوان جھڑپ میں شہید ہو گئے جبکہ ایک بھارتی فوجی بھی ہلاک ہوا،غیر ملکی میڈیا نے پولیس کے حوالے سے بتایا یہ ہلاکتیں گزشتہ شب اسوقت ہوئیں، جب عسکریت پسندوں نے ککپورا نامی گاؤں کے قریب ایک بھارتی فوجی چھاؤنی پر حملہ کر دیا، فائرنگ کے تبادلے میں ایک عام شہری کے علاوہ ایک فوجی بھی مارا گیا، پولیس نے مزید بتایا شوپیاں کے علاقے میں پیش آنیوالے ایک علیحدہ واقعے میں علیحدگی پسندوں نے ریموٹ کنٹرول بم کے ذریعے ایک فوجی گاڑی کو دھماکے سے اڑا نے کی کوشش کی، اس حملے میں تین فوجی زخمی ہو گئے۔ادھر مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پولیس نے پلوامہ کے ڈسٹرکٹ ہسپتال کے اندر اور اس کے اردگرد گولیاں،پیلٹ اور آنسو گیس کے گولے داغ کرکئی افراد کو زخمی کردیا ۔ میڈیارپورٹ کے مطابق پلوامہ کے ڈسٹرکٹ ہسپتال میں لوگوں نے اس وقت احتجاجی مظاہرہ کیا جب پولیس نے ایک شہری بلال احمد گنائی کی میت ان کے حوالے کرنے سے انکارکردیا۔ بلال ا حمدکو بھارتی فوج نے گزشتہ رات پلوامہ کے علاقے دوگام کاکہ پورہ میں فائرنگ کر کے شہید کرنے کی کوشش کی مگر وہ شدید زخمی ہوگیا جسے ہسپتال لے جایا گیا تاہم وہ جانبر نہ ہو سکا، بلا ل احمد کا تعلق پلوامہ کے علاقے لاجورہ سے ہے اور وہ پیشے سے ایک ڈرائیور تھا۔ دریں اثناء قابض انتظامیہ نے نوجوان کی شہادت پر احتجاجی مظاہروں کو روکنے کیلئے ضلع کے تمام سکولوں اور کالجوں کو بند کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں اور جنوبی کشمیر میں انٹرنیٹ اور ٹرین سروسز معطل کردی ہیں۔ بھارتی پولیس کی ہدایت پر سیلولر کمپنیوں نے اتوار کی رات کو ہی انٹر نیٹ سروس معطل کردی تھی جبکہ بانہال اور بارہمولہ کے درمیان ٹرین سروس بھی معطل کردی گئی ہے۔بعدازاں ضلع پلوامہ کے علاقے نروہ میں بھارتی فورسز کی فائرنگ سے شہید ہونیوالے شہری بلال احمد گنائی کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد نے شرکت کی۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق بلال احمد گنائی گزشتہ روز بھارتی فوج کے ایک کیمپ پر حملے کے بعد بھارتی فوجیوں کی اندھا دھند فائرنگ سے زخمی ہوا تھا۔ وہ رات کو ہسپتال میں زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔ شہید نوجوان کی میت نماز جنازہ کیلئے ان کے آبائی علاقے میں پہنچنے پر لوگوں نے آزادی کے حق میں اور بھارت کیخلاف فلک شگاف نعرے لگائے۔

مقبوضہ کشمیر

مزید : صفحہ اول