سندھ میں نگران کا قرر،وزیراعلیٰ اور اپوزیشن لیڈر کی ملاقات بے نتیجہ ختم

سندھ میں نگران کا قرر،وزیراعلیٰ اور اپوزیشن لیڈر کی ملاقات بے نتیجہ ختم

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)سندھ میں نگران وزیر اعلی کی تقرری کے لیے قائد ایوان وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ اور قائد حزب اختلاف خواجہ اظہارالحسن کی ملاقات بے نتجہ ختم ہوگئی دونوں جانب سے نگران وزیراعلی سندھ کے لیے پانچ پانچ نام پیش کیے گئے،ایم کیوایم اورتحریک انصاف سابق چیف سیکریٹری فضل الرحمن کے نام پرمتفق ہوگئے، خواجہ اظہار کہتے ہیں بلا تفریق کسی ایک نام پر اتفاق رائے کرلیں گے۔ وزیر اعلی سندھ مراد علی شاہ نے نگران وزیراعلی کے نام پرمشاورت کے لیے خواجہ اظہار الحسن سے سندھ اسمبلی میں اپنے چیمبرمیں ملاقات کی ملاقات میں نگران وزیر اعلی کے لیے کسی ایک نام پر اتفاق نہ ہوسکا ہے تاہم دونوں رہنماؤں نے مشاورت جاری رکھنے پراتفاق کیا ہے توقع ہے کہ وزیراعلی اور خواجہ اظہار کے درمیان کل بھی ایک بیٹھک ہوگی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعلی سندھ کی جانب سے نگران وزیراعلی کے لیے اپوزیشن لیڈرکو سابق چیف سیکریٹری غلام علی پاشا اورڈاکٹرقیوم سومرو کے نام پیش کیے ہیں جبکہ اپوزیشن لیڈر نے ایم کیو ایم کی طرف سے دونام جن میں سابق مشیرداخلہ سندھ آفتاب شیخ ،جاوید جبار اورسابق چیف سیکریٹری سندھ فضل الرحمن کا نام پیش کیا پیرکو ہونے والی ملاقات کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن اور فیصل سبزواری کا کہنا تھا کہ تمام تر اپوزیشن اور ایم کیوایم کی مشاورت سے چھ ناموں پر غور جاری ہے ہم چاہتے ہیں کہ نگران وزیر اعظم کی طرح نگران وزیر اعلی کی بھی نامزدگی ہو انہوں نے کہا کہ اگر اس فورم پر معاملہ حل نہ ہوا تو پھرنگران وزیراعلی کی تقرری کا معاملہ پارلیمانی کمیٹی کے سپرد کردیا جائے گا۔ سندھ میں نگران وزیراعلی کیلیے پی پی پی کی طرف سے جسٹس سرور کورائی، انجینئرحمیر سومرو، ڈاکٹر یونس سومرو ڈاکٹرقیوم سومرو،غلام علی پاشااور پاکستان تحریک انصاف نے جسٹس امیرہانی مسلم اورسابق چیف سیکریٹری فضل الرحمن مسلم لیگ فنکشنل نے سابق وزیراعلی سندھ سید غوث علی شاہ اور ایم کیوایم نے سابق مشیرداخلہ ا?فتاب شیخ اورسابق وفاقی وزیرجاوید جبار کا نام تجویز کیا ہے۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...