کراچی میں شوکت خانم کے ڈونرز کے اعزاز میں افطارر ڈنر کا اہتمام

کراچی میں شوکت خانم کے ڈونرز کے اعزاز میں افطارر ڈنر کا اہتمام

  



کراچی( خصوصی رپورٹ ) افطار ڈنر میں شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال کے لیے 13کروڑ روپے کے عطیات جمع ہو ئے۔شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال اور ریسرچ سنٹر کی انتظامیہ کی جانب سے کراچی میں ہسپتال کے ڈونرز کے اعزاز میں افطارر ڈنر کا اہتمام کیا گیا۔عمران خان ، چےئرمین شوکت خانم میموریل ٹرسٹ مہمانِ خصوصی تھے۔ اس موقع پر معروف بزنس مین ایس ایم منیر، عارف حبیب، عقیل کریم ڈھیڈی معروف اداکار بہروز سبزواری گلوکار فخرِ عا لم اور کر اچی کی کاروباری برادری سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے خواتین و حضرات کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔ہسپتال کے چیف ایگزیکٹوآفیسر، ڈاکٹر محمد عاصم یوسف نے اس موقع پرمہمانوں کو خوش آمدید کہتے ہوئے انہیں ہسپتال کی کارکردگی، درپیش مسائل اور مستقبل کے منصوبوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ انہوں نے بتایا کہ 2018ء کے لئے ہسپتال کا سالانہ بجٹ 11ارب روپے ہے۔ جس کانصف عوام کی زکوۃٰاور عطیات سے جمع کئے جائیں گے ۔ ہسپتال میں زیرعلاج کینسر کے 75 سے 80فیصد مریضوں کا علاج زکوہٰ فنڈز سے مفت ہورہا ہے قیام سے اب تک ہسپتال ایسے مریضوں کے علاج پر33ارب روپے سے زائدکی رقم خرچ کر چکا ہے۔ ڈاکٹر فیصل سلطان کا کہنا تھا کہ گزشتہ برس کے ٹوٹل بجٹ کا50فیصد زکوٰۃ و عطیات کی صورت میں حاصل کیا گیا 50فیصد اخراجات ہسپتال کے دیگر ذرائع آمدن سے پورے کیے گئے اسی طرح ہر سال کا زکوٰۃ فنڈ اسی سال خرچ کر دیا جاتا ہے۔ کراچی میں تیسرے شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال کی تعمیر کا آغاز بھی رواں برس کے اختتام تک متوقع ہے یہ ہسپتال تعمیر کے بعد پاکستان بھر میں کینسر کے علاج کی سب سے بڑی سہولت گاہ ہو گا ۔ ہسپتال کے توسعی منصوبوں کی تکمیل اور ہسپتال کے کام کو جاری رکھنے میں ہسپتال کے ڈونرز اور بہی خواہوں کا کردار بہت اہم ہے۔ معرف صنعتکار عارف حبیب اور ایس ایم منیر نے غریب کینسر کے مریضوں کو علاج معالجے کی سہولیات فراہم کرنے کے سلسلے میں عمران خان کی کوششوں کو سراہا۔ عمران خان نے کہا کہ کراچی شہر شوکت خانم ہسپتال کو فنڈز دینے والے 4بڑے شہروں میں شامل ہے اور مجھے امید ہے کہ کراچی کے شہری نہ صرف اس دفعہ بلکہ آئندہ بھی شوکت خانم ہسپتال کے ساتھ اسی طرح بڑھ چڑھ کر تعاون کرتے رہیں گے ۔ کراچی کے لوگ آج ایک نیک مقصد کے لیے اکٹھے ہوئے ہیں اورمیں ان کے جذبے کو سلام پیش کرتا ہوں۔ پاکستان میں کینسر ہسپتال بنانا اور پھر اس کو چلاتے رہنا ایک معجزے سے کم نہیں لیکن شوکت خانم میموریل کینسر ہسپتال دنیا کا واحد ہسپتال ہے جہاں اس قدر بڑی تعداد میں لوگو ں کو مفت علاج کی سہولت فراہم کی جاتی ہے۔یہاں غریب اور امیر میں فرق نہیں کیا جاتاہر مریض کو ایک ہی طرح کی سہولیات فراہم کی جاتی ہیں۔ عمران خان کا کہنا تھا کہ زکوٰۃ کی مد میں حاصل کی جانے والی رقوم خالصتاً غریب مریضوں کے علاج پر خرچ کی جاتی ہیں ہسپتال کے توسیعی منصوبوں کے اخراجات دیگر ذرائع آمدن سے پورے کیے جاتے ہیں عمران خان نے اس موقع پر لوگوں سے اپیل کی کہ وہ ہر دفعہ کی طرح اس سال بھی اپنی زکوٰۃ شوکت خانم کینسر ہسپتال کو دیں کیونکہ یہ ادارہ کینسرکے نادار اور غریب مریضوں کے لئے امید کی واحد کرن ہے ۔ان کی اپیل پر افطار ڈنر میں موجود خواتین وحضرات نے ہسپتال کے لیے بڑھ چڑھ کر عطیات دیے یہاں عارف حبیب کی جانب سے 50لاکھ، عقیل کریم ڈھیڈی کی جانب سے 50لاکھ اور 25لاکھ ماہانہ کے حساب سے 5 کروڑ اور جاہنزیب دھڑکی کی جانب سے ایک کروڑ دینے کا اعلان کیا گیا مجموعی طور پر13کروڑ کے عطیات اکٹھے کیے گئے۔

شوکت خانم

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...