نقیب کے معاملے پر 22کروڑ عوام میرے ساتھ ہیں،محمد خان محسود

نقیب کے معاملے پر 22کروڑ عوام میرے ساتھ ہیں،محمد خان محسود

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)مبینہ پولیس مقابلے میں جاں بحق ہونے والے نقیب اللہ محسود کے والد محمد خان محسود نے کہا ہے کہ نقیب کے خون کا سودا کرنا اپنے ماں باپ کے خون کا سودا کرنے کے مترادف ہوگا ۔ملک کے22کروڑ عوام کے میرے ساتھ ہیں ۔وزیراعظم ،چیف جسٹس آف پاکستان اور آرمی چیف نے یقین دلایا ہے کہ نقیب قوم کا بیٹا تھا اس کو انصاف ضرور ملے گا ۔سابق ایس ایس پی ملیر راؤ انوار نے اربوں روپے کے ناجائز اثاثے بنائے ہیں ۔راؤ انوار کو وی آئی پی پروٹوکول دیئے جانے کے خلاف سندھ ہائی کورٹ سے رجوع کررہے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر معروف سماجی رہنما جبران ناصر اور دیگر بھی موجود تھے ۔محمد خان محسود نے کہا کہ اتنے بڑے بڑے قاتل ایسے ہی گھوم پھر رہے ہیں۔ہم قانون اور آئین کے حدود میں رہ کر انصاف لے کر رہیں گے۔ راو انوار 424 لوگوں کا قاتل ہے اور ہر جگہ کھلا گھوم رہا ہے۔اب اس حوالے سے اگر کوئی احتجاج ہو گا تو اس کا عنوان ’’ریاست بڑی یا راؤ انوار‘‘ ہوگا۔انہوں نے کہا کہ نقیب اللہ محسود کے خون کا سودا نہیں ہو سکتاہے۔ نقیب کے خون کا سودا ایسا ہے جیسے کسی نے اپنی ماں باپ کے خون کا سودا کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک کے 22 کروڑ عوام میرے ساتھ ہیں۔ وزیر اعظم، چیف جسٹس اورآرمی چیف نے یقین دہانی کرائی ہے کہ ہمیں انصاف ضرور ملے گا ۔میں میڈیا کا بھی مشکورہوں جنہوں نے ہمارا ساتھ دیا۔ انہوں نے کہا راؤ انوار نے اربوں روپے کا نا جائز دھن کمایا۔ ایک ایس ایس پی نے 2012 سے 74 بار دبئی کا چکر لگایا۔ آج نیب میں را ؤانور کے کالے دھن کا پتا لگانے کے حوالے سے درخواست دی ہے۔ سندھ ہائی کورٹ میں درخواست جمع کرانے جا رہے ہیں کہ سندھ حکومت کے متعصبانہ رویے کا نوٹس لیا جائے۔ راؤ انور کے ساتھ ایک عام قیدی جیسا سلوک کیا جائے۔ ایک معطل افسر کو کورٹ میں سلیوٹ کیا جاتا ہے۔ سندھ حکومت را ؤانور کو وی آئی پی پروٹوکول دے رہی ہے۔اس موقع پر جبران ناصر نے کہا کہ راؤ انوار پہلا مجرم ہے جس کی زندگی گرفتاری کے بعد اور آسان ہو گئی ہے۔ نقیب کی والد سے وعدہ کیا گیا تھا کہ قانونی کاروائی کی جائے گی۔انصاف دیا جائے گا۔کیا انہیں انصاف دیا گیاہے۔انہوں نے کہا کہ اگر کوئی یہ سوچتا ہے کہ وہ ہمیں تھکادے گا تو ایسا ہرگز نہیں ہوگا ۔ہم یہ جنگ جاری رکھیں گے ۔ہم ان میڈیا اور پولیس والوں کے لیئے جنگ لڑ رہے ہیں جنہوں نے نقیب اللہ کی کوریج کی ہے۔ہم ان کے لیے جنگ لڑ رہے ہیں جو زندہ ہیں۔ہمیں امید ہے نیب اور عدالت ہمارا ساتھ دے گی۔ گرینڈ جرگاہ کے فوکل پرسن، سیف الرحمان نے کہا کہ راؤ انوار نے اربوں روپے کا نا جائز دھن کمایاہے ۔نقیب کا خون نہ کوئی بیج سکتا ہے نہ اسکو خریدنے کی کوئی طاقت رکھتا ہے۔ ریاست ایک ما ں ہے، اسکا دوہرا معیار سماج سے باہر ہے۔ہمارے صبر کا پیمانہ اب لبریز ہو رہا ہے۔ اگر حکومت نے اپنی روش نہیں بدلی تو گرینڈ جرگہ عید کے بعد ریڈ زون میں ایک بڑا احتجاج کرے گی۔ ریاست ماں ہے، اور ہم کو اس سے انصاف کی امید ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...