جے آئی ٹی میں بیان ریکارڈ کراتے وقت کیسا ماحول تھا؟کیپٹن صفدر نے احتساب عدالت میں ایسا جواب دے دیا کہ وکیل صفائی نے غیر ضروری گفتگو سے منع کردیا

جے آئی ٹی میں بیان ریکارڈ کراتے وقت کیسا ماحول تھا؟کیپٹن صفدر نے احتساب ...
جے آئی ٹی میں بیان ریکارڈ کراتے وقت کیسا ماحول تھا؟کیپٹن صفدر نے احتساب عدالت میں ایسا جواب دے دیا کہ وکیل صفائی نے غیر ضروری گفتگو سے منع کردیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس میں بیان قلمبند کراتے ہوئے کیپٹن (ر)صفدرنے کہا ہے کہ جے آئی ٹی میں5گھنٹے کی ریکارڈنگ کی گئی اورجے آئی ٹی میں جنگی قیدی والا ماحول تھا ۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت کے جج محمد بشیر شریف خاندان کیخلاف ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت کر رہے ہیں،مقدمے کے تیسرے ملزم کیپٹن صفدر کا بیان قلمبند کیا جا رہا ہے۔

دوران سماعت کیپٹن صفدر نے بیان قلمبند کراتے ہوئے کہا کہ جے آئی ٹی میں5گھنٹے کی ریکارڈنگ کی گئی اورجے آئی ٹی میں جنگی قیدی والا ماحول تھا ،اس پر وکیل صفائی امجد پرویز ایڈووکیٹ نے کہا کہ کیپٹن(ر)صفدرنے یہ بات عدالت کے سوال پرنہیں پراسیکیوٹرکی بات کے جواب میں کہی،احتساب عدالت کے جج نے کہا کہ انویسٹی گیشن کا اپنا ایک طریقہ ہوتا ہے ہم اس پر ابھی بات نہیں کر رہے،اس پر کیپٹن(ر) صفدر کے وکیل نے اپنے موکل کو پراسیکیوشن ٹیم سے غیرضروری گفتگو سے منع کردیا۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد


loading...