ڈونلڈ ٹرمپ کو تمغہ بہادری دینے والے افغان شہری کے ساتھ افغان طالبان نے کیا کیا؟ جان کر ٹرمپ بھی خوف میں ڈوب جائیں گے

ڈونلڈ ٹرمپ کو تمغہ بہادری دینے والے افغان شہری کے ساتھ افغان طالبان نے کیا ...
ڈونلڈ ٹرمپ کو تمغہ بہادری دینے والے افغان شہری کے ساتھ افغان طالبان نے کیا کیا؟ جان کر ٹرمپ بھی خوف میں ڈوب جائیں گے

  



کابل (مانیٹرنگ ڈیسک ) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو تمغہ شجاعت دینے والا بدقسمت افغان شہری زندہ رہنے کا حق بھی کھو بیٹھا اور چند ماہ تک چھپ چھا کر زندگی بچانے کے بعد بالآخر طالبان کے ہاتھوں المناک انجام سے دوچار ہوگیا ہے۔ اس شخص کو طالبان نے بم دھماکے میں ہلاک کر دیا ہے اور اس کے قتل کی ذمہ داری طالبان کے ترجمان ذبیح اللہ مجاہد نے قبول کرتے ہوئے اپنی ایک ٹویٹ میں کہا ”لوگار کے قریب دھماکے میں ان مجرموں میں سے ایک مارا گیا ہے جنہوں نے امریکی صدر ٹرمپ کو تمغہ دیا تھا۔ اس کا نام گل نبی تھا اور اسی نے وہ تمغہ ڈیزائن کیا تھا۔“

دوسری جانب افغان حکام نے اس واقعے کو امن کی پالیسی کی حمایت کرنے والے شہری کا قتل قرار دیا۔ VOAنیوز کے مطابق افغان وزارت دفاع کے ترجمان جنرل محمد ردمانیش کا کہنا تھا ”طالبان دہشتگردی کے اس عمل کی توجیہہ اسلامی یا کسی بھی قانون کے تحت پیش نہیں کرسکتے۔ وہ ہر اس شخص کو نشانہ بناتے ہیں جو انسانیت کی خدمت کرتا ہے۔ جس آدمی کو انہوں نے قتل کیا وہ تنہا نہیں تھا۔ لوگار کے تمام لوگ اس کے ساتھ تھے جب انہوں نے امریکی صدر ٹرمپ کے لئے تمغہ شجاعت کا اعلان کیا۔“

یاد رہے کہ گل نبی نے چند قبائلی سرداروں کے ساتھ مل کر امریکی صدر کے لئے تمغہ شجاعت تیار کیا تھا۔ رواں سال جرمنی کے مہینے میں منعقد ہونے والے ایک جرگے میں 300 سے زائد شرکاءنے امریکی صدر کو یہ تمغہ دینے کا اعلان کیا تھا۔ یہ تمغہ 13جنوری کے روز کابل میں امریکی سفارتخانے کو بھیجا گیا تھا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...