میڈیا انتخابات پر اثر انداز ہو رہا ہے :سینئرتجزیہ کاروں کی رائے

میڈیا انتخابات پر اثر انداز ہو رہا ہے :سینئرتجزیہ کاروں کی رائے
میڈیا انتخابات پر اثر انداز ہو رہا ہے :سینئرتجزیہ کاروں کی رائے

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)معروف تجزیہ کاروں نے کہا ہے میڈیا کسی حد تک انتخابات پر اثر انداز ہو رہا ہے ،امریکہ اور بھارت کا ایجنڈا پاکستان کی فوج کو تباہ کرنا ہے اور ان کا مقصد چین سے نمٹنے کیلئے اکھنڈبھارت کاحصول ہے ۔

دنیا نیو ز کے پروگرام ”آن دا فرنٹ “ میں گفتگو کرتے ہوئے تجزیہ کار مظہر عباس نے کہا کہ میڈیا کے حوالے حکومت کوہمیشہ شکایت رہتی ہے اور اپوزیشن میڈیا کے ساتھ رہتی ہے اور یہی اپوزیشن جب حکومت میں آجاتی ہے اس کو بھی میڈیا سے شکایات پیداہو جاتی ہیں۔تجزیہ کار ہارون الرشیدنے کہا کہ میڈیا میں ایک عنصر غیر ذمہ دارہے یہ جب میڈیا کو آزادی ملتی ہے تو ایسا ہوتا ہے لیکن آہستہ آہستہ میڈیا کا رویہ بہتر ہو جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ علی احمد کرد کہتے ہیں کہ فیصلے باہر سے آتے ہیں اور سپریم کورٹ کو لکھ کردیئے جاتے ہیں لیکن ثبوت کوئی نہیں دے رہے اتنا بڑا الزام لگانے کا ۔ اگر نواز شریف کو ٹارگٹ کیا جا رہا ہے تو نواز شریف سے پوچھا جائے کہ انہوںنے بے نظیر کو اپنی مدت کیو ں پوری نہیں کرنے دی تھی۔ انہوں نے کہا کہ یہ امریکہ کا ایجنڈا ہے کہ فوج کو تباہ کردیا جائے اور پاکستان کوکھنڈر بنا دیا جائے ۔تجزیہ کار لیفٹیننٹ (ر)جنرل امجد شعیب نے کہا ہے کہ میڈیا جب سچ بولتاہے تو بری لگتی ہے ، احتساب تو ابھی شروع ہی نہیں ہوا یہ تو نواز شریف کااپنا مقدمہ ہے جو انہوں نے خود شروع کیا اور اب معاملہ جب عدالتوں میں چلا گیا تو اب اعتراض کیا جا رہا ہے ،پلڈاٹ سروے ایک مکمل طور پر غلط بیانیہ ہے ، فوج اس معاملے میں کوئی بیان نہیں دے رہی ان سے کوئی نہیں پوچھتا کہ بھئی آپ پیسے کا جواب دیں ۔ میڈیا کا ایک حصہ غلط رول ادا کر رہاہے جو نواز شریف کو مظلوم بنا کر پیش کیا جا رہا ہے ۔ماہر قانون علی احمد کرد نے کہا کہ کئی چینلز پر غلط پروپیگنڈا کیا جاتا ہے جس کا مطلب میڈیا انتخابات پر اثر اندا ز ہو رہا ہے ،انہوں نے کہا فوج نے اچھا کام کیا ہے لیکن کچھ کام اچھے بھی نہیں ہیں ، عدلیہ کو یہ زیب نہیں دیتا کہ انہوں نے جے آئی ٹی میں ایم آئی اور آئی ایس آئی کے بندوں کو شامل کیا ۔ اس زمانے میں سچ کوچھپانا مشکل کام ہے ۔عدلیہ کے فیصلے غلط ہیں اور نوازشریف کوٹارگٹ کیا جا رہا ہے۔

مزید : قومی


loading...