حکومت پختون قیادت کے ذریعے مسئلے کا حل نکالے،لیاقت بلوچ

حکومت پختون قیادت کے ذریعے مسئلے کا حل نکالے،لیاقت بلوچ

  

لاہور ( نمائندہ خصوصی) قائم مقام امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ نے کہاہے کہ جب وزیراعظم عمران خان نے خود تسلیم کیا ہے کہ قبائلی عوام کے مطالبات اور احتجاج جائز ہے لیکن اسلوب درست نہیں تو انہیں احساس ہوناچاہیے تھاکہ پختون عوام بیرونی دہشتگردی ، دہشتگردو ں کےخلاف فوجی آپریشن اور گھروں سے بے گھر ہو کر آئی ڈی پیز کی آزمائش سے گزر چکے ہیں ۔ گھروں کو واپسی ، انتخابات اور فاٹا کے خیبر پی کے میں انضمام کے بعد بھی قبائلی عوام کی معاشی ، جمہوری ، قانونی محرومیاں ختم نہیں ہوئیںاس لیے حالات انتہائی نازک ہیں اور وفاقی اور صوبائی حکومتوں کی مجرمانہ غفلت نے عوام کو خوفناک ردعمل پر خود ہی مجبور کردیاہے ۔حکومت پختون قیادت اور مشران جرگہ کے ذریعے حالات کو کنٹرول اور مسئلہ کا حل نکالے ۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے رحیم یارخان میں عوامی افطاری اور ڈسٹرکٹ بار وکلا سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔

 لیاقت بلوچ نے کہاکہ ہے ماضی کی حکومتوں سے عوام مایوس ہوئے لیکن تبدیلی سرکار نے شدید مایوس کردیا ہے ۔بے روزگاری سونامی بنتی جارہی ہے ۔ ملکی حالات انتہائی خطرناک ہیں اور حکومت کی نااہلی و بے تدبیری سے مزید بگڑتے جارہے ہیں ۔ مہنگائی ، بے روزگاری اور عوام کی قوت خرید کم تر سطح پر آنے کی وجہ سے عوام ابتر حالات سے دوچار ہیں ، کسی وقت بھی انارکی کا لاوا پھٹ سکتاہے ۔آئی ایم ایف کی بدترین شرائط کی غلامی کے ساتھ تجارت ، صنعت ، زراعت کا پہیہ جام ہوگیاہے ۔ تاجر برادری کا کاروبار ی سرکل نہیں چل رہا۔ پیداواری لاگت کے بڑھنے سے صنعت بند ہے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -