لڑکی کے چہرے پر تیزاب پھینکنے والے  مجرم کو35 سال قید اور 20لاکھ جرمانہ 

  لڑکی کے چہرے پر تیزاب پھینکنے والے  مجرم کو35 سال قید اور 20لاکھ جرمانہ 

  

لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج سجاد احمد نے شادی سے انکار کرنے پر 16سالہ لڑکی کے چہرے پر تیزاب پھینکنے (بقیہ نمبر44صفحہ12پر )

والے مجرم علی حسن کو35 سال قید اور 20لاکھ روپے جرمانے کی سزا کا حکم سنا دیاہے ، جرمانہ ادا نہ کرنے کی صورت میں مجرم کو مزید 3 سال قید کی سزا بھگتنا ہوگی ۔انسداد دہشت گردی کی عدالت کے جج نے اس کیس کی باقاعدگی سے سماعت کی ۔جواں سالہ لڑکی لیزا کے چہرے پر تیزاب پھینکنے اوراس کا ساراچہرہ جلا دینے کے الزام میں تھانہ لوئر مال پولیس نے 2018ءمیں علی حسن کے خلاف مقدمہ درج کرکے تفتیش مکمل کرنے کے بعد چالان عدالت میں پیش کررکھا تھا۔پولیس تفتیش کے مطابق ملزم نے لیزا کو شادی پر راضی کرنا چاہا تاہم اس کے انکار پراس نے تیزاب خریدا اور لیزاکے گھرگھس کر ا±س کے چہرے پر پھینک دیا جس سے لیزابری طرح جھلس گئی جس کے بعد پولیس نے مقدمہ درج کرلیا،عدالت نے گزشتہ روز وکلاءکے دلائل سننے کے بعد مجرم علی حسن کو جرم ثابت ہونے پر مختلف دفعات کے تحت 35 سال قید و جرمانہ کی سزاکا حکم سنا دیاہے ۔

سزا

مزید :

ملتان صفحہ آخر -