حکومت نے نیا پاکستان ہاﺅسنگ سکیم کیلئے 5ارب روپے مختص کردیئے ،سیکرٹری ہاﺅسنگ

  حکومت نے نیا پاکستان ہاﺅسنگ سکیم کیلئے 5ارب روپے مختص کردیئے ،سیکرٹری ...

  

اسلام آباد (آئی این پی ) سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ہاوسنگ و تعمیرات کو بریفنگ دیتے ہوئے سیکرٹری ہاوسنگ نے بتایا کہ حکومت نے نیا پاکستان ہاوسنگ سکیم کے لئے 5ارب روپے مختص کیے ہیں جو اخوت تنظیم کے تحت تقسیم کیے جائیں گے بیرون ممالک بہت سی کمپنیوں نے ہاوسنگ پراجیکٹ میں سرمایہ کاری کےلے حکومت سے رابطہ کیا ہے جو ڈالر میں ادائیگیاں اور وصولی روپے میں کریں گی راولپنڈی میں 508کنال زمین پر مکانات تعمیر کیے جائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے ہاوسنگ و تعمیرات کا اجلاس چیئرمین کمیٹی سینیٹر میر کبیر احمد محمد شاہی کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاﺅس میں منعقد ہوا اجلاس میں سینیٹر ز لیفٹینٹ جنرل(ر)صلاح الدین ترمذی، چوہدری تنویر خان، انور لال دین، خانزادہ خان، سجاد حسین طوری اور ڈاکٹر شہزاد وسیم کے علاوہ سیکرٹری ہاوئسنگ اینڈ ورکس ڈاکٹر عمران زیب، ڈی جی ہاﺅسنگ فاﺅنڈیشن وسیم باجوہ، سی ای او پاکستان ہاﺅسنگ اتھارٹی فاﺅنڈیشن طارق رشید اور دیگر اعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں وفاقی وزیر مکانات و تعمیرات چوہدری طارق بشیر کے 25 اپریل2019 کو سینیٹ اجلاس میں متعارف کرائے گئے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہاوسنگ اتھارٹی بل 2019 کے علاوہ نیا پاکستان ہاوسنگ سکیم کے تحت کوئٹہ میں رہائشی سکیم کے معاملات کا تفصیل سے جائزہ لیا گیا۔ قائمہ کمیٹی نے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائز ہاوئسنگ اتھارٹی بل 2019کا تفصیل سے جائزہ لیتے ہوئے متعدد ترامیم کے ساتھ بل کی منظوری دے دی۔ نیا پاکستان ہاوسنگ سکیم کے تحت کوئٹہ میں رہائشی سکیم کے حوالے سے قائمہ کمیٹی نے معاملات کا تفصیل سے جائزہ لیا۔سیکرٹری مکانات و تعمیرات نے قائمہ کمیٹی کو بتایا کہ نیا پاکستان ہاوئسنگ سکیم کے تحت کوئٹہ میں شروع ہونے والی رہائشی سکیم صوبائی حکومت کامنصوبہ ہے ہمیں جوائنٹ وینچر میں مل کر کام کرنے کی دعوت دی گئی ہے ہم اس منصوبے پر مددگار کے طور پر کام کریں گے۔ چیئرمین کمیٹی سینیٹر میر کبیر احمد محمد شاہی نے کہا کہ وحدت کالونی کا بہت بڑا مسئلہ ہے۔ قائمہ کمیٹی کو وہاں کے منصوبے بارے کوئی معلومات نہیں ہے۔ وحدت کالونی کے 100 افراد کا وفد پریشان تھا ان کے مسئلے کا حل کیا جائے۔کمیٹی کو بتایا کہ گوادر کا منصوبہ بھی صوبائی حکومت کا ہے وہ زمین آفر کریں گے اور تعمیراتی کام وہاں ہوگا وہاں 4 ہزار گھر اور اپارٹمنٹس بنیں گے جیسے ہی معاہدے پر دستخط ہونگے کمیٹی کو آگاہ کر دیاجائے گا۔ کچلاک منصوبے کے حوالے سے کمیٹی کو بتایا گیا کہ 1ہزار یونٹس کا منصوبہ تھا مگر وزیراعظم پاکستان کی ہدایت پر 2200 یونٹ بنیں گے۔ممبر شپ اوپن تھی اور اس منصوبے کیلئے ساڑھے7 ہزار درخواستیں موصول ہوئی ہیں اگلے مرحلے میں قرعہ اندازی ہوگی اوریہ تمام عمل شفافیت پر مبنی ہوگا۔اس منصوبے میں 30 فیصد جنرل پبلک کا حصہ بھی ہوگا۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ نادرا نے 7اضلاع میں سروے مکمل کر لیا ہے اور نیا پاکستان ہاﺅسنگ منصوبے کیلئے پورے ملک کا سروے ہوگا۔جس پر چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ وفاقی وزیر نے بھی قائمہ کمیٹی کو یقین دہانی کرائی تھی کہ وزیراعظم کے 50 لاکھ گھر کے منصوبے کے حوالے سے تفصیلات سے آگاہ کریں گے مگر ابھی تک معلومات فراہم نہیں کی گئیں۔عید کے بعد ون ایجنڈا کمیٹی اجلاس طلب کر کے اس منصوبے کی تفصیلات حاصل کی جائیں گی۔

سیکرٹری ہاﺅسنگ

مزید :

صفحہ آخر -