ایشیائی ممالک پائیدار ترقی اہداف کے حصول میں ناکام رہینگے،اقوام متحدہ

ایشیائی ممالک پائیدار ترقی اہداف کے حصول میں ناکام رہینگے،اقوام متحدہ

  

جنیوا(آئی این پی)اقوام متحدہ نے ایشیائی پیسفیک ممالک کے بارے میں انکشاف کیا ہے کہ تمام ممالک پائیدار ترقی کے اہداف(ایس ڈی جی) 2030میں طے شدہ 17 اہداف کے حصول میں ناکام رہیں گے۔اقوام متحدہ اکنامکس اینڈ سوشل کمشین برائے ایشیا اینڈ پیسیفک (ای ایس سی اے پی)کے اعداد وشمار کے مطابق ایس ڈی جی کے نصف سے زائد اہداف کے لیے کی جانے والی کوششیں غلط سمت میں جاری ہیں اور ترقی کا گراف ساقط ہوچکا ہے۔رپورٹ کے مطابق صاف پانی اور حفظان صحت ماحول (ایس ڈی جی 6)کی فراہمی سے متعلق اقدامات انتہائی مایوس کن ہے۔اس ضمن میں مزید بتایا گیا کہ جائے کار پر ساز گار ماحول اور اقتصادی ترقی(ایس ڈی جی 7)اور ذمہ دارانہ خرچ اور پیدا کاری (ایس ڈی جی 12)کے لیے طے شدہ اہداف حصول سے بہت دور ہیں۔رپورٹ کے مطابق خطے میں غربت کے خاتمے(ایس ڈی جی1)، معیاری تعلیم(ایس ڈی جی(کی فراہمی، قابل استعمال اور کلین انرجی (ایس ڈی جی 7)کی دستیابی کے ضمن میں اٹھائے گئے اقدامات سے گراف میں معمولی بہتری ریکارڈ کی گئی۔اقوام متحدہ کی رپورٹ میں بتایا گیا کہ ماحولیات اور قدرتی وسائل سے متعلق ایس ڈی جی کے اہداف منفی اشاریے ظاہر کررہے ہیں۔ایس ڈی جی پروگریس رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایشیائی اور پیسفیک کے ذیلی خطوں مثلا جنوب اور شمالی جنوبی ایشیا میں بہتر شہری اور کمیونیٹز(ایس ڈی جی 11)، کلائیمیٹ ایکشن(ایس ڈی جی 13)اور لائف آن لینڈ(ایس ڈی جی 15)سے متعلق اہداف میں حکومتی اقدامات مایوس کن رہے جبکہ جنوبی مشرقی ایشیائی حصے میں ایس ڈی جی 8، ایس ڈی جی 13 اور امن، انصاف اور مضبوط اداروں (ایس ڈی جی 16)کے لیے ناکافی اقدامات اٹھائے گئے۔

اقوام متحدہ 

مزید :

صفحہ اول -