نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ نظر ثانی درخواست نہیں سن سکتے،سپریم کورٹ نے سزائے موت کے مجرم کی دوسری نظرثانی اپیل مستردکردی

نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ نظر ثانی درخواست نہیں سن ...
نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ نظر ثانی درخواست نہیں سن سکتے،سپریم کورٹ نے سزائے موت کے مجرم کی دوسری نظرثانی اپیل مستردکردی

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ آف پاکستان نے سزائے موت کے مجرم کی دوسری نظرثانی کی اپیل بھی مسترد کردی،چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے ہیں کہ مجرم چاہے تو صدر مملکت کے پاس رحم کی اپیل دائر کر سکتا ہے،نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ نظر ثانی درخواست نہیں سن سکتے۔

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں سزائے موت کے منتظر قیدی کی نظرثانی اپیل پر سماعت ہوئی ،چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ کیس ربراہی میں بنچ نے ویڈیو لنک کے ذریعے کیس کی سماعت کی ،عدلت نے مجرم رستم شیخ کی دوسری نظرثانی کی اپیل بھی مسترد کر دی۔

چیف جسٹس پاکستان نے ریمارکس دیئے کہ مجرم چاہے تو صدر مملکت کے پاس رحم کی اپیل دائر کر سکتا ہے،نظر ثانی کی اپیل مسترد ہونے کے بعد دوبارہ نظر ثانی درخواست نہیں سن سکتے، چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ سپریم کورٹ کے اپنے 4فیصلوں کی نظیر موجود ہے، عدالت نے کہا کہ قانون ہمیں پابند کرتا ہے، اس لیے ہم دوبارہ نظر ثانی اپیل نہیں سن سکتے، آپ کے پاس ایک ہی راستہ ہے صدرمملکت سے دوبارہ رحم کی اپیل کریں ،اگرہم نے آپ کی دوبارہ نظرثانی اپیل سنی توہرمجرم دوبارہ نظرثانی دائرکردےگا۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -