ہانگ کانگ معاملہ پرامریکہ اور چین اقوام متحد میں متصادم

        ہانگ کانگ معاملہ پرامریکہ اور چین اقوام متحد میں متصادم

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیوروچیف) امریکہ اور چین اقوام متحدہ میں آمنے سامنے آکر تصادم کی راہ پر چل پڑے۔ یہ صورت حال بدھ کے روز اس وقت پیدا ہوئی جب امریکہ نے ہانگ کانگ کے علاقے میں چین کی طرف سے نئے قومی سکیورٹی قانون کو نافذ کرنے کے منصوبے کی مخالفت میں سکیورٹی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلانے کا مطالبہ کیا۔جس کے جواب میں چین نے فوری طور پر اجلاس کو روکنے کیلئے کوششوں کا آ غاز کردیا۔اقوام متحدہ میں امریکی مشن نے ایک بیان میں کہا کہ یہ مسئلہ ”ایک ہنگامی عالمی تشویش کا معاملہ ہے جس سے بین الاقوامی امن اور سکیورٹی متاثر ہوسکتی ہے“ مشن نے پندرہ رکنی سکیورٹی کونسل پر زور دیا کہ وہ فوری طور پر اپنے اجلاس میں اس پر غور کرے۔اقوام متحدہ میں چین کے نمائندے ژانگ زن نے اپنے جوابی بیان میں اجلاس بلانے کی درخواست کی شدید مخالفت کی۔ ان کا موقف یہ تھا کہ ہانگ کانگ کے بارے میں قانون چین کا داخلی معاملہ ہے جو سلامتی کونسل کے دائرہ کار سے باہر ہے،امریکہ کی یہ درخواست ایسے وقت کی جا رہی ہے جب پہلے ہی اس کی کوروونا وائرس کے آغاز اور پھیلاؤ کے بارے میں چین سے کشیدگی کا فی بڑھ چکی ہے، امریکہ کو شکایت ہے کہ ووہان کے شہر میں جب وباء پھوٹی تو چین نے اس کی معلومات میں شفافیت نہیں رکھی جبکہ چین اسے تسلیم نہیں کرتا۔

امریکہ چین متصادم

مزید :

صفحہ اول -