سینئر صحافی فخرالدین سید کی وفات ناقابل تلافی نقصان ہے، محمود خان

سینئر صحافی فخرالدین سید کی وفات ناقابل تلافی نقصان ہے، محمود خان

  

پشاور (سٹاف رپورٹر)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوامحمود خان نے کورونا متاثر سینئر صحافی فخر الدین سید کے انتقال پر گہرے رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے لواحقین سے تعزیت کی ہے۔ یہاں سے جاری اپنے تعزیتی بیان میں وزیراعلیٰ نے غمزدہ خاندان سے دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے شہید کے درجات کی بلندی اور پسماندگان کیلئے صبر جمیل کی دُعا کی ہے۔ اُنہوں نے کہا ہے کہ صحافتی میدان اور خصوصاً کورونا کی موجودہ صورتحال میں شہید کی گراں قدر خدمات کو ایک عرصے تک یاد رکھا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ موجودہ صورتحال میں صحافیوں نے اپنی جانوں کو خطرے میں ڈال کر عوام کو با خبر رکھنے کیلئے جو خدمات سرانجا م دے رہے ہیں،وہ قابل ستائش ہیں اور حکومت اُن کے کردار کو قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دُکھ کی اس گھڑ ی میں صوبائی حکومت شہید کے اہل خانہ اور صحافی برادری کے غم میں برابر کی شریک ہے۔

پشاور (سٹاف رپورٹر) وزیر اعلی خیبر پختونخوا کے مشیربرائے اطلاعات اجمل خان وزیر نے سینئر صحافی فخر الدین سید کی وفات پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سینئر صحافی فخرالدین سید نے کورونا کے خلاف فرنٹ لائن پر لڑکر جان کی بازی ہاری ہے،ان کی وفات سے صوبہ ایک قابل صحافی سے محروم ہوگیا ہے۔صحافت کے لئے فخرالدین سید کی گراں قدر خدمات ہیں جو ہمیشہ یاد رکھی جائیں گی۔ وزیراعلی محمود خان نے انکے لواحقین کے لئے 10 لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا ہے اور محکمہ اطلاعات کو 10 لاکھ روپے فخرالدین سید کے لواحقین کو جلد ازجلد دینے کی ہدایت کی ہے۔سول سیکرٹریٹ اطلاع سیل میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے اجمل وزیر نے کہا کہ فخرالدین سید کے لواحقین دکھ کی اس گھڑی میں اپنے آپکو اکیلا نہ سمجھیں،صوبائی حکومت مشکل کی اس گھڑی میں انکے ساتھ ہے، صحافی برادری فرنٹ لائن پر خدمات سرانجام دے رہی ہے۔اجمل وزیر نے کہا کہ حکومت صحافیوں کی ہر ممکن مدد کریگی،صحافیوں نے ہمیشہ مشکل صورتحال میں حکومت کا ساتھ دیا ہے۔ موجودہ صورتحال میں کورونا کے حوالے سے عوام میں شعور پیدا کرنے کے حوالے سے میڈیا اہم کردار ادا کررہا ہے۔کورونا کے حوالے سے مشیر اطلاعات نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں ریکوری ریٹ ملک کے دیگر صوبوں سے سب سے زیادہ ہے جو 31 فیصد ہے، صوبے میں کورونا کے 200 ائسولیش وارڈز قائم ہیں جن میں 5598 بستروں کی گنجائش ہے، صوبے میں 359 قرنطینہ مراکز قائم ہیں اور 550 سے زائد وینٹی لیٹرز کورونا مریضوں کے لئے مخصوص ہیں، اجمل وزیر نے ایک بار پھر عوام سے اپیل کی کہ سماجی فاصلے سمیت دیگر حفاظتی انتظامات پر من و عن عمل کرکے ایک اہم ذمہ دار شہر ی کا ثبوت دیں، کیونکہ اس وقت کورونا کا علاج صرف اور صرف احتیاطی تدابیر پر عمل کرنا ہے، مشیر اطلاعات نے کہا کہ اللہ تعالی نے عمران خان کی شکل میں پاکستان کو ایک لیڈر عطا کیا ہے جو ہمیشہ قوم کا سوچتے ہیں، لوٹو تے پوٹو گروپ کو اپنی لوٹی ہوئی دولت بچانے کی فکر ہے، انہوں نیکہا کہ لیڈر اور ڈیلر میں فرق ہوتا ہے عمران خان ایک لیڈر ہے جو ہمیشہ فرنٹ سے لیڈ کرتا ہے، اس سے پہلے ڈیلر تھے جنہوں نے ملک کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا ہے، اجمل وزیر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے وژن کے مطابق وزیراعلی خیبر پختونخوا خود فرنٹ پر موجود ہیں، وزیراعلی محمود خان اپنی جان کی پرواہ کئے بغیر ہسپتالوں اور قرنطینہ مراکز کے دورے کررہے ہیں کیونکہ ہمیں اپنی جانوں سے زیادہ عوام کی جانیں بچانے کی فکر ہے۔

مزید :

صفحہ اول -