سٹاک مارکیٹ میں تیزی، شراکت داروں کو 64ارب روپے کا فائدہ، نیب کے خوف سے سرمایہ کاری رکی ہوئی ہے: اسد عمر  

سٹاک مارکیٹ میں تیزی، شراکت داروں کو 64ارب روپے کا فائدہ، نیب کے خوف سے ...

  

کراچی (اکنامک رپورٹر) پاکستان سٹاک ایکسچینج میں رواں کاروباری ہفتے کے آخری روزجمعہ کو بھی کاروبار حصص میں تیزی کا رجحان برقرار رہا اور کے ایس ای100انڈیکس 300پوائنٹس کے اضافے سے 47ہزار پوائنٹس کی نفسیاتی حد عبور کر گیا جبکہ 64ارب روپے کے اضافے سے سرمائے کا مجموعی حجم 81کھرب روپے سے تجاوز کر گیا،کاروباری تیزی کے سبب58فیصد حصص کی قیمتیں بھی بڑھ گئیں۔کاروبار کے اختتام پر کے ایس ای100انڈیکس 335.54پوائنٹس بڑھ گیا جس کی وجہ سے انڈیکس 46790.75پوائنٹس سے بڑھ کر 47126.29پوائنٹس ہو گیا اسی طرح 162پوائنٹس کے اضافے سے کے ایس ای30انڈیکس 19137.48پوائنٹس سے بڑھ کر 19299.48پوائنٹس ہو گیا جبکہ کے ایس ای آل شیئرز انڈیکس 31463.37پوائنٹس سے بڑھ کر 31703.75پوائنٹس ہو گیا۔کاروباری تیزی کی بدولت مارکیٹ کے سرمائے میں 64ارب56کروڑ33لاکھ98ہزار149روپے کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا جس کے نتیجے میں سرمایے کا مجموعی حجم80کھرب66ارب 69کروڑ71لاکھ 79ہزار498روپے سے بڑھ کر 81کھرب31ارب 26کروڑ5لاکھ 77ہزار647روپے ہو گیا۔دوسری جانب انٹر بینک اور مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں جمعہ کو روپے کے مقابلے ڈالر کی قدر میں کمی کا رجحان رہا۔فاریکس ایسوسی ایشن آف پاکستان کی رپورٹ کے مطابق جمعہ کو انٹر بینک میں روپے کے مقابلے ڈالر کی قدر میں 10پیسے کی کمی واقع ہوئی جس سے ڈالر کی قیمت خرید154.55روپے سے کم ہو کر154.45روپے اور قیمت فروخت154.65روپے سے کم ہو کر154.55روپے پر آ گئی اسی طرح مقامی اوپن کرنسی مارکیٹ میں 30پیسے کی کمی سے ڈالر کی قیمت خرید154.50روپے سے گھٹ کر154.40روپے اور قیمت فروخت155روپے سے گھٹ کر154.70روپے پر آ گئی۔

سٹاک مارکیٹ

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،نیوزایجنسیاں) وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسدعمر نے کہا ہے کہ سالانہ منصوبہ بندی کمیٹی نے آئندہ مالی سال کیلئے  4.8 فیصد گروتھ ریٹ کی منظوری دیدی، آئندہ مالی سال کیلئے 900 ارب ترقیاتی بجٹ رکھا جائے گا،نیب کے خوف سے سرمایہ کاری رکی ہوئی ہے،نیب سے سرکاری افسران اور کاروباری افراد کو تحفظ دینے کیلئے قانون لائیں گے۔ پاک چائنہ فرینڈ شپ سینٹر میں پریس کانفرنس کر تے ہوئے وزیر منصوبہ بندی اسدعمر نے کہاکہ سالانہ پلان کوآرڈی نیشن کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں اگلے سال کے سالانہ پلان اور ترقیاتی بجٹ کی منظوری دیدی گئی، اگلے سال شرح نمو کا 4.8 فیصد تخمینہ ہے، بہت اچھی گروتھ اس سال ہوئی ہے اور 6.5 فیصد جی این پی گروتھ رہی، اس سال 2004 کے بعد معیشت میں سب سے زیادہ اضافہ ہوا۔ انہوں نے بتایا کہ گزشتہ سال کپاس کی فصل بہت بری طرح متاثر ہوئی، اس سال کپاس کیلئے بہتر بیج فراہمی کے اقدامات کیے ہیں اور عالمی منڈی میں کپاس کی قیمت بہتر ہے، ساڑھے دس ملین کپاس کی بیل اگلے سال کا تخمینہ ہے،پولٹری کی صنعت کورونا بندشوں کے باعث شدید متاثر ہوئی، پولٹری اگلے سال نارمل ہوگا۔اسد عمر نے کہا ہے کہ صنعتی پیکیج کے بہت اچھے اثرات سامنے آرہے ہیں، تعمیراتی شعبہ کی ترقی حوصلہ افزاء ہے، ملکی برآمدات کو فروغ مل رہا ہے، اگلے مالی سال کیلئے برآمدات کا ہدف 28ارب ڈالر ہے، اگلے مالی سال کیلئے ترسیلات زر کا تخمینہ 33.1ارب ڈالر ہے۔جمعہ کو وفاقی وزیر منصوبہ بندی و ترقی اسد عمر نے میڈیا بریفنگ کے دوران کہا کہ الیکٹرانک ووٹنگ کو یقینی بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں اور وزیراعظم عمران خان الیکٹرانک ووٹنگ کے حوالے سے پیشرفت کا مسلسل جائزہ لے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ترقیاتی بجٹ کیلئے ترجیحات کا تعین کیا جا رہا ہے، اگلے مالی سال کیلئے ملکی معاشی شرح نموں کا تخمینہ 4.8فیصد ہے، بجٹ میں لائیو سٹاک اور زرعی شعبے کی ترقی ترجیحات میں شامل ہیں۔ وفاقی وزیر منصوبہ بندی نے کہا کہ صنعتی پیکج کے بہت اچھے اثرات سامنے آرہے ہیں، تعمیراتی شعبہ کی ترقی حوصلہ افزاء ہے، ملکی برآمدات کو فروغ مل رہا ہے، رواں مالی سال آئی ٹی  برآمدات میں 46فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا اور اگلے مالی سال کیلئے برآمدات کا ہدف 28ارب ڈالر ہے، اگلے مالی سال کیلئے ترسیلات زر کا تخمینہ 33.1ارب ڈالر ہے۔

اسدعمر

مزید :

صفحہ اول -