صنوفی اور جی ایس کے کا کویڈویکسین کی افادیت کے مطالعے کا آغاز

      صنوفی اور جی ایس کے کا کویڈویکسین کی افادیت کے مطالعے کا آغاز

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) صنوفی اور جی ایس کے نے اپنے ایڈجو وینٹڈ ری کمبینینٹ پروٹین کوویڈ-19 ویکسین کی حفاظت، افادیت اور امیونوجینیسٹی کا جائزہ لینے کے لئے اپنے فیز 3 کلینیکل اسٹڈی میں اندراج کا آغاز کیا۔ عالمی، بے ترتیب، ڈبل بلائنڈ پلیسیبو کے زیر ِکنٹرول فیز 3 کے مطالعے میں امریکہ، ایشیا، افریقہ اور لاطینی امریکہ کے متعدد ممالک کے  18 سال سے زیادہ عمر کے 35,000سے زیادہ رضاکار شامل ہوں گے۔ مطالعہ کا بنیادی نکتہ سارس-کووی -2 نا بالغوں میں علامتی کوویڈ-19 کی روک تھام ہے، جس میں ثانوی نقطہ شدید کوویڈ-19 بیماری کی روک تھام اور اے سمٹیمیٹک انفیکشن کی روک تھام ہے۔ دو مرحلے کے تحت، مطالعہ شروع میں ایک ویکسین تیار کرنے کی اصل افادیت کی تحقیقات کرے گا جس میں اصلی D614 وائرس (ووہان) کو  شامل کیاجائے گا، جبکہ دوسرا مرحلہ B.1.351 (جنوبی افریقی)  دوسری تشکیل کا اندازہ کرے گا۔ حالیہ سائنسی ثبوت سے پتہ چلتا ہے کہ B.1.351  کے خلاف تیار شدہ اینٹی باڈیز زیادہ قابلِ منتقلی حالتوں میں وسیع پیمانے پر تحفظ فراہم کرسکتی ہیں۔ فیز 3 کے ڈیزائن، جغرافیوں کے وسیع تنوع میں پائے جانے والے، مختلف گردش کرنے والے مختلف حالتوں کے خلاف ویکسین کی افادیت کے للئے بھی معاون ہے۔ فیز 2 کے حالیہ مطالعے کے حوصلہ افزا عبوری نتائج کے بعد، کمپنیاں ابتدائی ویکسین پلیٹ فارم موصول ہونے سے قطع نظر، مضبوط بوسٹر ردعمل پیدا کرنے کیلئے ایڈجو وینٹڈ ریکمبینینٹ پروٹین کوویڈ-19 ویکسین کی افادیت کا اندازہ کرنے کے لئے آنے والے ہفتوں میں کلینیکل اسٹڈیز بھی شروع کریں گی۔ گلوبل ہیڈ آف صنوفی پاسچر کے ایگزیکٹو نائب صدر، تھامس ٹرومف نے کہا، ''ہمیں اس طرح کے اہم مرحلے 3 کے مطالعے میں شروع ہونے والی پہلی ویکسین دیکھنے کے لئے حوصلہ افزائی کی جاتی ہے، کیونکہ ہمیں یقین ہے کہ ہمارا منفرد ٹکنالوجی پلیٹ فارم طبی لحاظ سے ویکسین کا آپشن فراہم کرے گا۔''۔"ہم نے اپنی ویکسین تیار کرنے کی حکمت ِعملی کو مستقبل کے منتظر نظریات کی بنیاد پر ڈھال لیا ہے کیونکہ وائرس اب بھی پیدا ہو رہاہے، اور ساتھ ہی یہ بھی توقع کرتے ہیں کہ وبائی امراض کے بعد کی ترتیب میں کیا ضرورت ہوسکتی ہے۔ یہ آزمائش اس وبائی بیماری کے جاری اثرات پر قابو پانے میں مدد کرنے کے لئے ہمارے نقطہ نظر میں عجلت اور چستی کا ثبوت ہے۔جی ایس کے ویکسینز کے صدر راجر کونور نے مزید کہا، ''ہمارا خیال ہے کہ دنیا بھر میں لوگوں تک پہنچنے میں مدد کے لئے کوویڈ-19 کے مزید حل پیش کرنے کی بہت زیادہ ضرورت ہے، خاص طور پر جب وبائی شکل پیدا ہو گئی ہے اور مختلف حالتیں اب بھی سامنے آتی رہتی ہیں۔ ہماری ٹیکنالوجی اور اسٹڈی ڈیزائن کو ایڈجسٹ کرنا اس ضرورت کی عکاسی کرتا ہے اور اس سے مزید پروٹین پر مبنی ویکسین کی صلاحیت کو مزید تقویت پہنچے گی۔ ہم ان رضاکاروں کے شکرگزار ہیں جو آزمائشوں میں حصہ لیں گے اور امید کرتے ہیں کہ ہم نے اب تک جو نتائج دیکھے ہیں ان  کی بنیاد پر ہم ویکسین کو جلد از جلد دستیاب کراسکیں گے۔مرحلہ 3 کے مطالعے نے عبوری مرحلہ 2 کے نتائج کی پیروی کی جس میں بتایا گیا ہے کہ ایڈجو وینٹڈ ری کمبینینٹ کوویڈ-19 ویکسین نے تمام بالغ عمر گروپوں میں اینٹی باڈی کے رد عمل کو بے اثر کرنے کی اعلی شرحیں حاصل کیں، جن میں 95 سے 100فیصد سیرو کنورژن کی شرح ہے۔ ایک ہی انجیکشن کے بعد، شرکاء میں سارس-کو - وی  انفیکشن سے قبل انفیکشن کی معیاری  انفلوٹائزنگ سطح بھی پیدا  کی گئی تھی، جو بوسٹر ویکسین کی حیثیت سے تیاری کے قوی امکان  کی جانب اشارہ ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -