صوبائی کابینہ آراکین کی تعداد آئین سے متجاوز،احمد کنڈی 

  صوبائی کابینہ آراکین کی تعداد آئین سے متجاوز،احمد کنڈی 

  

پشاور(نیوز رپورٹر)  خیبر پختونخو ااسمبلی کے اجلاس میں پوائنٹ آف آرڈر پر تقریر کرتے ہوئے پیپلز پارٹی کے احمد کنڈی نے کہا کہ صوبائی کابینہ میں نئے وزرا شامل کئے جانے کے بعد اراکین کابینہ بشمول وزیر اعلی کی تعداد آئین میں دئے گئے حد سے تجاوز کرگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ آٹھارویں ترمیم میں واجح طور پر درج ہے کہ صوبائی وزرا کی تعداد  اسمبلی کی کل تعداد کے 11فیصد سے زیادہ  غیر آئینی تصور ہوگا۔احمد کنڈی نے اسپیکر سے مطالبہ کیا کہ اس حوالے سے واجح رولنگ دے۔انہوں نے اسپیکر کو یاد دلایا کہ بطور کسٹوڈین آف دی ہاوس وہ ایوان کی کاروائی آئین کے مطابق چلانے کے پابند ہیں۔خوش دل خان ایڈوکیٹ نے بھی معاملے پر بات کرتے ہوئے احمد کنڈی کے موقف کی تائید کی اور کہا کہ چونکہ اس وقت صوبائی کابینہ کے آراکین کی تعداد وزیر اعلی سمیت 17ہیں،لہذا ایوان کی کاروائی غیر قانونی تصور ہوگی۔معاملے پر حکومتی موقف کی وضاحت کرتے ہوئے صوبائی وزیر شوکت یوسفزئی نے کہا کہ یہ تکنیکی معاملہ ہے اور حکومت نے اس حوالے سے محکمہ قانون سے قانونی رائے مانگی ہے۔اپوزیشن آراکین نے اصرار کیا کہ اسپیکر معاملے کی قانونی پہلو کے بارے میں وضاحت کے لئے ایڈوکیٹ جنرل کو اسمبلی اجلاس میں طلب کرے۔بعدآزاں اسپیکر نے رولنگ دیتے ہوئے کہا  کہ احمد کنڈی کا نکتہ قابل غور ہے،ایڈوکیٹ جنرل پیر کو اسمبلی اجلاس میں آکر قانونی رائے سے ایوان کو آگاہ کرے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -