وفاقی وزیر خزانہ کی تعیناتی کیخلاف درخواست قابل سماعت ہونے سے متعلق مزید دلائل طلب 

وفاقی وزیر خزانہ کی تعیناتی کیخلاف درخواست قابل سماعت ہونے سے متعلق مزید ...

  

 لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس ساجد محمود سیٹھی نے وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین کی تعیناتی  کے خلاف دائر درخواست کے قابل سماعت ہونے سے متعلق مزید دلائل طلب کرتے ہوئے سماعت یکم جون تک ملتوی کر دی فاضل جج نے فرید عادل ایڈووکیٹ کی درخواست پر سماعت کی۔وفاقی حکومت کے وکیل ڈپٹی اٹارنی جنرل آفتاب رحیم نے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر اعتراض اٹھا دیا۔ ڈپٹی اٹارنی جنرل نے عدالت کو بتایا کہ صدر مملکت نے شوکت ترین کی بطور وزیر خزانہ تقرری کا نوٹیفیکیشن جاری کیا، لاہور ہائیکورٹ کا دائرہ اختیار نہیں درخواست اسلام آباد میں دائر کی جاسکتی ہے۔درخواست میں وفاقی حکومت، وزارت قانون اور شوکت ترین کو فریق بنایا گیا ہے۔درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ شوکت ترین کو صدر مملکت نے وفاقی وزیر خزانہ مقرر کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے، آئین پاکستان کسی بھی غیر منتخب شخص کو وفاقی وزیر بنانے کی اجازت نہیں دیتا، عوام کے ووٹوں سے منتخب شخص کو ہی وزیر خزانہ تعینات کیا جاسکتا ہے، شوکت ترین کی تقرری آئین میں طے کئے گئے اصولوں کے برخلاف ہے، شوکت ترین کی بطور وزیر خزانہ تقرری کو کالعدم قرار دیا جائے، شوکت ترین کو بطور وزیر خزانہ کام کرنے سے روکنے کا حکم دیا جائے۔

دلائل طلب 

مزید :

صفحہ آخر -