بنک ڈیفالٹرسٹی سٹیل ملز کی جائیداد  نیلام کرنے کا حکم،11 جون مقرر

بنک ڈیفالٹرسٹی سٹیل ملز کی جائیداد  نیلام کرنے کا حکم،11 جون مقرر

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ کے مسٹر جسٹس شمس محمود مرزا نے بنک ڈیفالٹرسٹی سٹیل ملز کی جائیداد نیلام کرنے کا حکم جاری کردیا، عدالت نے بنک ڈیفالٹر کمپنی کی جائیداد11جون کو نیلام کرنے کی تاریخ مقرر کر دی۔فاضل جج نے بنک الفلاح کی جائیداد نیلامی درخواست پر سماعت کی۔درخواست میں دبئی کے رہائشی فیصل عبدالرحیم مرداس، عبدالرحیم مرداس، محمد اسد، شعیب ارشد کو فریق بنایا گیا۔بنک کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ سٹی سٹیل ملز کے مالکان کو کاروبار کیلئے حاصل کئے گئے قرض کی عدم ادائیگی پر ڈیفالٹر قرار دیا گیا، ڈیفالٹر کمپنی نے قرض کیلئے موضع میسن فیروز والہ میں  91 کنال 14 مرلے کی تین جائیدادیں رہن رکھوائیں، فیصل عبدالرحیم مرداس سمیت دیگر ڈیفالٹرز نے سٹیل ملز کی تمام مشینری اور دیگر آلات بھی رہن رکھوائے، ڈیفالٹر سٹی سٹیل ملز کیخلاف 16کروڑ 91 لاکھ 34 لاکھ کی ڈگری جاری ہو چکی ہے، عدالتی ڈگری کے باوجود سٹی سٹیل ملز مالکان بنک کی رقم ادا نہیں کر رہے، درخواست میں استدعا کی گئی تھی کہ قرض کی رقم ریکور کرنے کیلئے ڈیفالٹر سٹی سٹیل ملز کی رہن شدہ جائیداد نیلامی کا حکم دیا جائے، عدالتی حکم پر کورٹ آکشنر افتخار اللہ ملک ایڈووکیٹ نے جائیداد نیلامی کا شیڈول پیش کیا،عدالت نے تخمینہ رپورٹ پر اعتراضات سننے کے بعد ڈیفالٹر کمپنی کی جائیداد نیلامی کاحکم دے دیا۔

نیلامی حکم 

مزید :

صفحہ آخر -