لادی گینگ کا ٹھ کا نہ تباہ، ڈاکوؤں کا مغوی اہلکاروں کے بدلے ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ 

لادی گینگ کا ٹھ کا نہ تباہ، ڈاکوؤں کا مغوی اہلکاروں کے بدلے ساتھیوں کی رہائی ...

  

   ڈی جی خان،راجن پور،شکار پور(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوزایجنسیاں)ڈی جی خان میں لادی گینگ کیخلاف رینجرز اورپولیس کامشترکہ  آپریشن تیسرے روزبھی جاری رہا۔فورسز لادی گینگ کے ٹھکانے تک پہنچ گئی لیکن وہاں کوئی موجود نہ تھا،جس پر فورسزنے لادی گینگ کے ٹھکانے کو گراکر آگ لگادی گئی ادھر راجن پور میں گزشتہ روز اغوا ہونیوالے 2پولیس اہلکاروں کی بازیابی کیلئے کچھہ سونمیانی میں بھی ڈاکوں کیخلاف جاری آپریشن میں اب تک کوئی کامیابی حاصل نہیں ہوئی،ڈاکوں نے پولیس اہلکاروں کی رہائی کے بدلے اپنے ساتھی کی رہائی کامطالبہ کردیاہے۔دوسری جانب شکار پور میں ڈاکوؤں کیخلاف کئی روز سے جاری آپریشن میں پولیس کی جانب سے اب 3بلٹ پروف بکتر بند گاڑیاں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔سکھر رینج میں ڈاکوؤں کیخلاف فیصلہ کن آپریشن کیلئے آئی جی سندھ مشتاق مہر کی سربراہی میں اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈی آئی جی لاڑکانہ مظہر نواز شیخ اور ایس ایس پی شکار پور تنویر تنیو نے شرکت کی۔اجلاس کے دوران بتایا گیا کہ شکار پور آپریشن میں جدید ڈبل چادروں والی 3نئی بلٹ پروف بکتر بند گاڑیاں شامل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے جو ٹیکسلا سے روانہ ہو چکی ہیں اور 2 روز تک پہنچ جائیں گی۔اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ ڈاکوؤں کے خلاف اسمارٹ انٹیلی جنس بنیادوں پر آپریشن کیا جائے گا۔اجلاس کو بتایا گیا کہ ڈی آئی جی لاڑکانہ مظہر نواز شیخ اور ایس ایس پی شکار پور تنویر تنیو آپریشن کے مشترکہ انچارج ہوں گے جبکہ یڈیشنل آئی جی سکھر رینج ڈاکٹر کامران فضل اور آئی جی سندھ مشتاق مہر آپریشن کی نگرانی کریں گے۔

ڈاکوؤں کیخلاف آپریشن  

مزید :

صفحہ آخر -