ہیومن رائٹس کونسل میں فلسطین کے حق میں قرار داد کی منظوری بڑی کامیابی: فواد چوہدری 

ہیومن رائٹس کونسل میں فلسطین کے حق میں قرار داد کی منظوری بڑی کامیابی: فواد ...

  

  اسلام آباد (این این آئی)وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری اور وفاقی وزیر انسانی حقوق ڈاکٹر شیری مزاری نے اقوام متحدہ کی ہیومن رائٹس کمیٹی کی جانب سے فلسطین کے حق میں قرارداد کی منظوری کو بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہاہے کہ قرارداد کی رو سے ایک کمیشن تشکیل پائیگا جس کو یو این جنرل اسمبلی کے صدر مکمل سہولیات فراہم کریگا،امریکہ اور دیگر ممالک جو اسرائیل کو ہتھیار فراہم کرتے ہیں،ان کو ان ہتھیاروں کو فلسطینیوں کیخلاف استعمال نہ کرنا یقینی بنانا ہو گا،ایسا کرنا بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے،کمیشن فلسطینیوں کو جبری اپنی زمینوں سے بے خل کرنے سے روکے گا،پاکستان اور او آئی سی کو اس طرح کی قرارداد کشمیر پر بھی پیش کرنی چاہیے۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر اطلاعات نے کہاکہ یو این کی ہیومن رائٹس کمیٹی نے فلسطین کے حق میں قررداد منظور کی،پاکستان نے فلسطین کے معاملے پر بڑی کامیابی ملی،عمران خان کی قیادت میں کامیابی ملی۔ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہاکہ ہیومن رائٹس کونسل جنیوا میں منظور ہوئی،پہلے بھی قرارددیں منظور ہوئیں مگر اس کی الگ اہمیت ہے،انسان حقوق کے علمبردار کچھ ممالک کے کچھ علمبردار ممالک نے قرارداد کی مخالفت کی،پاکستان نے او آئی سی کے تعاون سے قررداد منظور ہوئی،اس قرارداد میں امریکہ کو اسرائیل کیساتھ تعلقات میں انسانی حقوق کی بنیادوں کو ملحوظ خاطر رکھنے پر زور دیا،اس قرارداد کی رو سے ایک کمیشن تشکیل پائیگا جس کو یو این جنرل اسمبلی کے صدر مکمل سہولیات فراہم کریگا،امریکہ اور دیگر ممالک جو اسرائیل کو ہتھیار فراہم کرتے ہیں ان کو ان ہتھیاروں کو فلسطینیوں کیخلاف استعمال نہ کرنا یقینی بنانا ہو گا،ایسا کرنا بین الاقوامی انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہاکہ کمیشن فلسطینیوں کو جبری اپنی زمینوں سے بے خل کرنے سے روکے گا۔ انہوں نے کہاکہ اسرائیل کی نسل پرست پالیسی کے خلاف اقدامات کریگا،کمیشن اس بات کو یقینی بنائے گا کہ اسرائیل کسی بھی طور فلسطینیوں کو ان کی زمینوں سے جبری بے دخل نہیں کریگا۔ انہوں نے کہاکہ اسرائیل نے اسلام کی مقدسات ہر حملہ کیا ہے،پاکستان اور او آئی سی کو اس طرح کی قرارداد کشمیر پر بھی پیش کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ جرمنی اور آسٹریا،چیک ری پبلک،برطانیہ نے اس قررداد کے خلاف ووٹ دیا،انسانی حقوق کی بات کرنیوالے ممالک نے اس کے خلاف ووٹ دیا۔ انہوں نے کہاکہ جاپان،اٹلی اور بھارت نے ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا،یہ ممالک باتیں تو انسانی حوق کی کرتے ہیں مگر عملی طور پر اپنی ذاتی مفاد کو دیکھتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہندوستان کو کشمیر پر بھی ایسی قرارداد پیش ہونے کی ڈر سے ساتھ نہیں دیا،یو این ہیومن ٹائٹس کونسل میں قرارداد مظور ہونا پاکستان کی بڑی سفارتی کامیابی ہے،اس کی منظوری سے بڑے ممالک کی کی جاری داری چیلنج ہو گئی۔ شیریں مزاری نے کہاکہ طاقتور ممالک نے قرارداد کی ووٹنگ میں حصہ نہیں لیا،چین اور روس کی حمایت سے بہت فرق پڑا،اب امریکہ اور برطانیہ کے کچھ کرنے کا انتظار نہیں کرنا پڑے گا،ان ممالک کے اندر سے بھی پریشرز پڑ رہے ہیں 

فواد چوہدری

مزید :

صفحہ اول -